یوپی میں سلاٹر ہاؤس بند کئے جانے سے مقامی لوگ پریشان ، ہزاروں افراد بے روزگار– News18 Urdu

یوپی میں سلاٹر ہاؤس بند کئے جانے سے مقامی لوگ پریشان ، ہزاروں افراد بے روزگار

الہ آباد / علی گڑھ / میرٹھ ۔ یو پی کے بعض اضلاع میں سلاٹر ہاؤس بند کیے جانے کے خلاف مقامی لوگوں میں بے چینی بڑھتی جا رہی ہے ۔

Mar 23, 2017 10:41 AM IST | Updated on: Mar 23, 2017 10:41 AM IST

الہ آباد / علی گڑھ / میرٹھ ۔ یو پی کے بعض اضلاع میں سلاٹر ہاؤس بند کیے جانے کے خلاف مقامی لوگوں میں  بے چینی بڑھتی جا رہی ہے ۔ سلاٹر ہاؤس کو بغیر کسی نوٹس دئے بند کیے جانے پر لوگوں میں شدید ناراضگی ہے۔ سلاٹر ہاؤس بند کیے جانے کے خلاف  اب لوگوں نے احتجاج کا راستہ اختیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ سلاٹر ہاؤس بند ہو جانے سے ہزاروں  لوگوں کے سامنے بے روزگاری کا خطرہ پیدا ہو گیا ہے ۔ وہیں ادھر اترپردیش حکومت کے ذریعہ چلائی جا رہی غیر قانونی مذبح خانوں کے خلاف مہم میں کل علی گڑھ میں تھانہ گاندھی پارک پولیس نے کاروائی کرتے ہوئے پانچ گاڑیوں سےلے جائے جا رہے 60 بھینسوں کو اپنے قبضہ میں لے لیا ۔ اس کارروائی میں 20 لوگ بھی حراست میں لیے گئے ہیں ۔

الہ آباد کے قدیم سلاٹر ہاؤس کو یوگی حکومت کے اقتدار میں آنے کے دوسرے دن ہی بند کر دیا گیا تھا ۔ اس  سلاٹر ہاؤس میں مقامی ضروروتوں کے علاوہ   ایکسپورٹ کے لیے بھی  ذبیحہ ہوا کرتا تھا ۔ لیکن انتظامیہ نے بغیر کسی تحریری نوٹس کے گذشتہ 20؍ مارچ کو سلاٹر ہاؤس میں تالا لگا دیا  ۔ قریشی برادری سے تعلق رکھنے والے تاجروں کا مطالبہ ہے کہ  کم از کم سلاٹر ہاؤس میں  مقامی ضرورتوں کے لیے ذبیحہ کی اجازت دی جائے۔ عام طور پر لوگوں سے گلزار رہنے والی سلاٹر ہاؤس کی سڑک ان دنوں سنسان  پڑی ہے ۔ سلاٹر ہاؤس پر مزدوری کرنے والے افراد بھی کام نہ ہونے کی وجہ سے بے کار ہو گئے ہیں ۔ گرچہ ابھی تک کوئی سیاسی پارٹی سلاٹر ہاؤس کو کھلوانے کے لیے سامنے نہیں آئی ہے ۔ لیکن مجلس اتحاد المسلمین کا کہنا ہے کہ وہ اس مسئلے کو لیکر عوام کے سامنے جائے گی۔

یوپی میں سلاٹر ہاؤس بند کئے جانے سے مقامی لوگ پریشان ، ہزاروں افراد بے روزگار

حاجی یوسف قریشی

وہیں، علی گڑھ کے تھانہ گاندھی پارک کے بونیر چوراہے پر چیکنگ کے دوران پولیس نے  کچھ گاڑیوں پر شک ہو نے پر اسے رکوایا تھا۔ اس میں بڑی تعداد میں بھینسیں بھری ہوئی تھیں۔ پولیس نے سبھی کو گرفتار کرتے ہوئے تھانہ گاندھی پارک  کی تحویل میں دے دیا ہے۔ مذکورہ معاملہ کی وضاحت کرتے ہوئے سرکل آفیسر دوئم امت کمار نے بتایا کہ غیر قانونی ذبیحہ اورمذبح خانوں کو لیکرحکومت بہت سخت ہے ۔ اسی تعلق سے شہر میں بھی مہم چلائی جا رہی ہے ۔ کل گاندھی پارک پولیس کی مدد سے بونیر چوراہے کے پاس چیکنگ کے دوران 5 سے زیادہ گاڑیوں میں سے 60 جانور پکڑے گئے ہیں ۔ انھوں نے بتایا کہ یہ جانور کہاں سے لائے گئے ہیں ۔ اس کی ہم تفتیش کررہے ہیں ۔ ویسے ابھی تک کسی کے پاس سے کوئی بھی خرید سے متعلق کوئی دستاویز نہیں ملا ہے ۔

ادھر میرٹھ میں مذبح خانوں کو لیکر حکومت کی جانب سے جاری کسی حکمنامے کے بغیر ہی  ضلع اور پولیس انتظامیہ کی سختی سے اس کاروبار سے وابستہ افراد میں خوف اور بے چینی نظرآ رہی ہے ۔ اتر پردیش میں  میٹ کاروبار اور اس کاروبار سے وابستہ افراد  کے مسائل اور موجودہ ماحول کو لیکر ای ٹی وی سے  آل انڈیا جمعیت القریش کے صوبائی صدر حاجی یوسف قریشی نے تشویش کا اظہار کیا ۔ انہوں نے  گزشتہ بی جے پی حکومتوں میں اختیار کی گئی پالیسی کو ہی اختیار کرنے کی یوگی حکومت سے  اپیل کی۔ ساتھ ہی مذبح خانوں کی جدیدکاری کا حکومت سے مطالبہ کیا۔ مذبح خانوں کو بند کرنے سے بےروزگاری اور صوبے کے اقتصادی نقصان کا حوالہ دیا ۔

slaughter house

یو پی میں یوگی آدتیہ ناتھ کی حکومت بنتے ہی ریاست  کےمختلف علاقوں میں سلاٹر ہاؤس بند کرنے کی اطلاعات ہیں ۔ بی جے پی نے اپنے انتخابی منشور میں مشینی سلاٹر ہاؤس کو بند کرنے کا وعدہ کیا تھا ۔ لیکن ابھی تک جتنے بھی سلاٹر ہاؤس بند کیے گئے ہیں ان میں سے مشینی  سلاٹر ہاؤس برائے نام ہی ہیں  ۔

Loading...