نیپال الیکشن: بائیں بازو کے اتحاد کو خاصی سبقت

Dec 09, 2017 08:57 PM IST | Updated on: Dec 09, 2017 08:57 PM IST

کٹھمنڈو۔ نیپال میں دو بڑی کمیونسٹ پارٹیوں یونیفائڈ مارکسسٹ لیننسٹ اور کمیونسٹ پارٹی آف نیپال(ماؤوسٹ سینٹر) نے پارلیمانی انتخابات کے نتائج میں خاصی سبقت حاصل کرلی ہے اور آئندہ حکومت بھی اسی اتحاد کی بننے جا رہی ہے۔ نیپال الیکشن کمیشن نے آج جو ابتدائی نتائج جاری کئے ہیں۔ ان کے مطابق اس اتحاد نے قومی اسمبلی کی19 سیٹیں جیت لی ہیں اور اکیاسی حلقوں میں اسے خاصی سبقت حاصل ہے۔

اسمبلی میں 165 سیٹوں پر براہ راست انتخاب عمل میں آتا ہے اور 110 سیٹیں حسب تناسب نمائندگی کی بنیاد پر پارٹیوں کو دی جاتی ہیں۔ نیپال کانگریس جو پچھلے الیکشن میں سب سے بڑی پارٹی بن کر ابھری تھی اب تک محض تین سیٹیں ہی جیت پائی ہے۔ مقبول نیپالی روزنامہ ’’کانتی پور‘ کے اڈیٹر سدھیر شرما کے مطابق واضح اشارہ مل گیا ہے کہ بائیں بازو کا اتحاد ہی غالب اکثریت کے ساتھ حکومت بنائے گا۔

نیپال الیکشن: بائیں بازو کے اتحاد کو خاصی سبقت

نیپال کی پارلیمنٹ: فائل فوٹو

سرکاری طور پر کہا گیا ہے کہ حتمی نتائج کے اعلان میں کچھ دن لگ جائیں گے۔ نیپال میں پارلیمانی انتخابات انتہائی پرامن رہے۔ دو مرحلے میں پولنگ ہوئی۔ ملک کے شمالی حصے میں 26 نومبر کو ووٹ ڈالے گئے تھے اور باقی حصوں میں جمعرات کو۔ نیپال میں 2015 میں منظور کردہ آئین کے تحت سات صوبائی اسمبلیوں کا یہ پہلا الیکشن تھا۔ انتخابی ذمہ داران کے مطابق 67 فیصد کے قریب پولنگ ہوئی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز