غریب لڑکیوں کی شادی کیلئے جاری امدادی اسکیم کا غریبوں کو نہیں مل رہا فائدہ– News18 Urdu

غریب لڑکیوں کی شادی کیلئے جاری امدادی اسکیم کا غریبوں کو نہیں مل رہا فائدہ

اتر پردیش حکومت کی جانب سے غریب لڑکیوں کی شادی کیلئے امداد کی رقم میں اب اضافہ کر دیا گیا ہے ۔ اب یہ تیس ہزار روپئے کر دیا گیا ہے۔

Sep 08, 2016 06:03 PM IST | Updated on: Sep 08, 2016 06:03 PM IST

مئو (سید فرحان) اتر پردیش حکومت کی جانب سے غریب لڑکیوں کی شادی کیلئے امداد کی رقم میں اب اضافہ کر دیا گیا ہے ۔ اب یہ تیس ہزار روپئے کر دیا گیا ہے۔ لیکن حقیقت یہ ہے کہ اسکیم کا فائدہ حاجت مندوں کو نہیں مل پارہا ہے ۔ کئی جگہوں پر ضرورت مندوں کی بجائے دلالوں کے ذریعہ غیر ضرورتمند اس کا فائدہ اٹھاتے پکڑے جا چکے ہیں ۔ مئو میں اس طرح کی فرضی گیری بھلے ہی نہ ہورہی ہو، لیکن سرکاری افسران اور ان کے عملے کی وجہ سے یہ مدد ان تک نہیں پہنچ پا رہی، جن کے لیے یہ اسکیم حقیقت میں نافذ کی گئی ہے۔

مئو ضلع میں محکمہ اقلیتی فلاح و بہبود کے دفتر میں سال رواں میں 1077 فارم غریب مسلم لڑکیوں کی شادی امداد اسکیم کے تحت جمع کئے گئے ۔ ان تمام درخواستوں کو اقلیتی فلاح و بہبود افسر نے متعلقہ افسران کو مزید تفتیش کے لئے ارسال کر دیا ۔ لیکن آخری تاریخ میں چند روز ہی باقی رہنے کے باوجود 10 فیصد درخواستوں کی رپورٹ ہی ڈی ایم او آفس کو موصول ہوسکی ہے ۔ اس معاملے میں خود ضلع اقلیتی فلاح و بہبود افسر نے ڈاٹا پیش کرتے ہوئےافسران کی لاپروائی کی پول کھولی ۔

غریب لڑکیوں کی شادی کیلئے جاری امدادی اسکیم کا غریبوں کو نہیں مل رہا فائدہ

خیال رہے کہ غریب لڑکیوں کی شادی امداد اسکیم کی درخواست پرایس ڈی ایم اور بلاک ڈیولپمنٹ افسر کے ذریعہ موقع کا معائنہ کر کے رپورٹ تیار کی جاتی ہے اور پھر اسی رپورٹ کی بنیاد پر امداد جاری کی جاتی ہے ۔ لیکن متعلقہ افسر درخواست کی فائل دبا کر بیٹھ جاتے ہیں اور ضروتمند اس سے محروم رہ جاتے ہیں۔

Loading...

Loading...