بنگلہ دیش میں روہنگیا پناہ گزینوں کو اپنے مستقبل کے تئيں غیر یقینی صورتحال کا سامنا

بنگلہ دیش میں لاکھوں روہنگیاں پناہ گزینوں کو مشکلات سے نجات ملنے کے آثار اب تک نظر نہيں آرہے ہيں

Oct 11, 2018 08:45 AM IST | Updated on: Oct 11, 2018 08:45 AM IST

بنگلہ دیش میں لاکھوں روہنگیاں پناہ گزینوں کو مشکلات سے نجات ملنے کے آثار اب تک نظر نہيں آرہے ہيں اور مستقبل قریب میں ان کی وطن واپسی کے لئے حالات کچھ بھی سازگار نہيں ہونے والے ہیں۔  جمیلہ نام کی ایک 35 سالہ خاتون پناہ گزین نے نم آنکھوں سے میانمار کے راکھین میں اپنے خاندان کی دردناک کہانی سنا تے ہوئے ایسے ہی خدشات کا اظہار کیا ۔ 

کوکس بازار کے کٹوپلانگ کیمپ میں جمیلہ نے متعدد ممالک کے صحافیوں کے وفد کے سامنے کہا کہ روہنگیا پناہ گزینوں کے میانمار واپس لوٹنے کے لئے حالات پرامن اور سازگار نہیں ہونے والے ہيں۔ انہوں نے بتایا کہ دوسال قبل راکھین میں واقع اپنے گاؤں میں میانمار کے لٹیرے فوجی دستے نے ان کے شوہر عبد العزیز اور کمسن بیٹے کو ا نے کے سامنے قتل کردیا تھا۔

بنگلہ دیش میں روہنگیا پناہ گزینوں کو اپنے مستقبل کے تئيں غیر یقینی صورتحال کا سامنا

روہنگیا فوٹو، یو این آئی، فائل فوٹو۔

انہوں نے کہا کہ ' وحشی فوجی جوانوں نے میرے شوہر کو قتل کیا اور میرے سامنے ہی میرے بیٹے کو ذبح کردیا، جنہوں نے بے دردی سے ہمارے بوچیدان گاؤں کو تباہ کردیا۔ میں دوسرے خاندانوں کے افراد کے ساتھ میانمار سے بھاگ کر بنگلہ دیش کے پناہ گزین کیمپ میں پہنچی"۔  پناہ گزيں کیمپ میں ایک دوسرے پناہ گزيں زاہد حسین نے بھی ایسی کہانی سنائی، جس کا خاندان بھی میانمار فوج کی وحشیانہ کارروائی سے جان بچا کر بنگلہ دیش میں پناہ لینے پر مجبور ہوا تھا۔ یہ دونوں بنگلہ دیش میں ضلع کوکس بازار کے سب-ڈویژن اوکھیا میں پناہ لینے والے 12 لاکھ روہنگیا افراد میں شامل ہیں، جو میانمار میں وحشیانہ ظلم و ستم کا سامنا کرنے کے بعد بنگلہ دیش فرار ہونے پر مجبور ہوئے ہيں۔

میانمار کی سرحد سے متصل اس علاقہ کے پورے پہاڑی خطے پر پھیلے ہوئے پناہ گزیں کیمپ میں بانس اور ٹین سے عارضی پناہ گاہيں بنائی گئی ہے۔ تقریبا چھ ہزار ایکڑ اراضی پر 30 کلسٹروں پر مشتمل پناہ گزین کیمپ میں ان کا گزر بسر ہورہا ہے۔

Loading...

روہنگیا پناہ گزینوں کے کیمپ کوکس بازار سٹی سے 40 کلومیٹر کے فاصلے پر پہاڑی جنگلی اراضی پر واقع ہيں، جو کبھی ہاتھیوں اور جنگلی جانوروں کا بسیرا تھا۔ پورا کیمپ کا علاقہ نیلے اور ہرے ٹین کی چھت ، بانس اور ترپال کی شیٹ گھرا ہوا ہے، اور کیمپ کے اندر جانے کے لئے چاروں طرف کچی سڑکیں ہیں۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز