نوبل انعام یافتہ لیو شيااوبو کی موت ، نوبیل کمیٹی نے چین کو ذمہ دار قرار دیا

Jul 13, 2017 11:31 PM IST | Updated on: Jul 13, 2017 11:31 PM IST

اوسلو: ناروے واقع نوبل کمیٹی نے آج کہا کہ نوبل انعام یافتہ باغی رہنما لیو شيااوبو کی موت کے لیے چین ذمہ دار ہے۔ کمیٹی کی لیڈربیرٹ ریئس اینڈرسن نے کہا کہ ہم اس سے بے حد پریشان ہیں کہ لیو شيااوبو کو شدید طور پر بیمار ہونے کے بعد بھی ایسے ہسپتال میں نہیں بھیجا گیا جہاں انہیں مناسب طبی سہولت مل سکتی تھی۔

محترمہ اینڈرسن نے رائٹر کو ای میل کر کے کہا کہ چین کی حکومت مسٹر لیو کی بے وقت موت کی ذمہ داری لے۔ غور طلب ہے کہ چین کے باغی لیڈراور نوبل امن انعام یافتہ لیو شيااوبو کی طویل علالت کے بعد آج چین کے شین یانگ شہر میں انتقال ہو گیا۔ وہ 61 سال کے تھے۔ انہیں کینسر تھا اور بہت زیادہ طبیعت بگڑنے پر حال ہی میں انہیں جیل سے ہسپتال بھیجا گیا تھا۔

نوبل انعام یافتہ لیو شيااوبو کی موت ، نوبیل کمیٹی نے چین کو ذمہ دار قرار دیا

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز