گمنام جائیداد پر انکم ٹیکس کا شکنجہ، اب تک 230 سے ​​زیادہ کیس درج

Feb 22, 2017 10:14 PM IST | Updated on: Feb 22, 2017 10:14 PM IST

نئی دہلی : انکم ٹیکس محکمہ نے گمنام جائیدادپر شکنجہ کسنا شروع کر دیا ہے ۔ وزیر اعظم نریندر مودی اس بارے میں گمنام جائیداد والوں کو پہلے ہی آگاہ کر چکے تھے۔ وزیر اعظم نے حال ہی میں کہا تھا کہ کالے دھن کے خلاف نوٹ بندی جیسا سخت فیصلہ لیا گیا تھا اور اب گمنام جائیداد کی باری ہے۔ گمنام جائیداد پر چابک چلاتے ہوئے انکم ٹیکس محکمہ نے نوٹ بندی کے بعد نئے گمنام لین دین قانون کے تحت اب تک 230 سے ​​زیادہ کیس درج کئے ہیں۔ اس کے علاوہ ملک بھر میں 55 کروڑ روپے کی املاک قرق بھی کی گئی ہے۔ گمنام لین دین قانون گزشتہ سال یکم نومبر کو نافذ کیا گیا تھا ۔ اس قانون کی خلاف ورزی میں بھاری بھرکم جرمانہ اور 7 سال جیل کی سزا کا بندوبست ہے۔

پی ٹی آئی کے پاس موجود محکمہ انکم ٹیکس کی ایک رپورٹ کے مطابق محکمہ کی طرف سے فروری کے وسط تک اس قانون کے تحت 235 معاملات درج کئے ہیں۔ 140 معاملات میں وجہ بتاو نوٹس جاری کیا گیا ہے۔ ان معاملات میں 200 کروڑ روپے کی جائیداد شامل ہے۔ رپورٹ کے مطابق 124 معاملات میں 55 کروڑ روپے کی جائیدادیں عارضی طور پر قرق کی گئی ہیں۔ حکام نے کہا کہ قرق کی گئی جائیداد میں بینک اکاؤنٹس میں جمع، زراعت اور دیگر زمین، فلیٹ اور زیورات شامل ہیں۔ گزشتہ سال 8 نومبر کو نوٹ بندی کے بعد انکم ٹیکس محکمہ نے اشتہارات کے ذریعے لوگوں کو خبردار کیا تھا کہ وہ پرانی كرنسي میں اپنا بے حساب پیسہ کسی دوسرے کے بینک اکاؤنٹ میں نہ جمع کرائیں۔ اس میں کہا گیا تھا کہ اس طرح کی کسی سرگرمی میں گمنام اسٹیٹ کے لین دین قانون، 1988 کے تحت مجرمانہ معاملہ دائر کیا جائے گا۔ یہ منقولہ اور غیر منقولہ دونوں کے لئے ہو گا۔

گمنام جائیداد پر انکم ٹیکس کا شکنجہ، اب تک 230 سے ​​زیادہ کیس درج

نوٹ بندی کے بعد انکم ٹیکس محکمہ کی بینکوں میں جمع کی جا رہی رقم پر قریبی نظر تھی۔ ایک افسر نے بتایا کہ محکمہ کو کچھ ایسے معاملات کا پتہ چلا، جن میں غیر قانونی طریقے اپنائے گئے تھے اور مشتبہ کیش کو گمنام اکاؤنٹس یا جن دھن اکاؤنٹس میں جمع کرایا گیا تھا۔ اس کے بعد گمنام لین دین قانون کی سخت دفعات کو استعمال کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز