مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے زیر اہتمام گیارہواں آل انڈیا ریفریشر کورس برائے ائمہ ، دعاۃ و معلمین کا آغاز آج

مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے زیر اہتمام گیارہواں آل انڈیا ریفریشر کورس برائے ائمہ، دعاۃ و معلمین کا حسن آغاز آج شام چار بجے اہل حدیث کمپلیکس اوکھلا، نئی دہلی میں ہوگا

Nov 12, 2017 02:18 PM IST | Updated on: Nov 12, 2017 02:18 PM IST

دہلی: مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے زیر اہتمام گیارہواں آل انڈیا ریفریشر کورس برائے ائمہ، دعاۃ و معلمین کا حسن آغاز آج شام چار بجے اہل حدیث کمپلیکس اوکھلا، نئی دہلی میں ہوگا، جس میں ملک کے طول عرض سے ائمہ، دعاۃ اور معلمین شریک ہورہے ہیں۔ یہ دورہ ۱۲؍نومبر ۲۰۱۷ء سے شروع ہوکر ۱۹؍نومبر ۲۰۱۷ء تک جاری رہے گا۔ اس میں شرکاء کی ٹریننگ اور تدریب کے لیے اکابر علماء کرام اور پروفیسرحضرات کے علاوہ مختلف موضوعات اور میدانوں کے ماہرین کی خدمات حاصل کی گئی ہیں۔ ان باتوں کی جانکاری مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند سے جاری ایک اخباری بیان میں دی گئی ہے۔

پریس ریلیز کے مطابق اس آل انڈیا ریفریشر کورس کے مشرف عام اور مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے امیر مولانا اصغرعلی امام مہدی سلفی نے اس کورس کی اہمیت وضرورت بیان کرتے ہوئے کہا کہ تدریب وٹریننگ کی اہمیت وضرورت زندگی کے ہرمیدان میں مسلم ہے۔ اس سے صلاحیتوں میں نکھارآتاہے۔ فعالیت میں اضافہ ہوتاہے۔ منصوبہ بند طریقے سے زندگی گزارنے ،وسائل کومنظم طورپر استعمال کرنے اوراحساس ذمہ داری کے ساتھ قوم وملت اورانسانیت کی خدمت کرنے کا سلیقہ آتاہے۔ روحانی بالیدگی کے ساتھ ساتھ علوم ومعارف کی نئی نئی راہیں کھلتی ہیں اور ماہرین کے تجربات سے فائدہ اٹھانے کا سنہری موقع ملتاہے۔یہی وجہ ہے کہ دنیا کی ہرمتمدن وترقی یافتہ قوموں میں تدریب وٹریننگ کا اہتمام کیا جاتاہے۔ لیکن افسوس کی بات یہ ہے کہ دینی و تعلیمی اداروںمیں اس کی ضرورت زیادہ ہونے کے باوجود اس کا چلن عام نہیں ہے ۔چنانچہ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند نے علماء ودعاۃ اورمعلمین کی تدریب وٹریننگ کوترجیحات میں شامل کرکے پندرہ سال قبل اسے شروع کیا تھا جو کہ آج بھی جاری ہے جس کے غیرمعمولی اثرات مرتب ہوئے ہیں ۔اور یہ ریفریشر کورس اسی سلسلہ کی اہم کڑی ہے۔

مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے زیر اہتمام  گیارہواں آل انڈیا ریفریشر کورس برائے ائمہ ، دعاۃ و معلمین کا آغاز آج

امیر جمعیت نے کہا کہ موجودہ وقت میں داعش و دہشت گردی نے ظلم وبربریت اور بد امنی کی خطرناک صورت حال پیدا کردی ہے اس کا قلع قمع اور تعاقب وقت کی بڑی ضرورت ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اس ریفریشر کورس میں پورے ملک سے آئے ہوئے ائمہ، دعاۃ و معلمین کو ملک وسماج کی فلاح و بہبود اور قوم وملت کی بہتر خدمات انجام دینے کی ٹریننگ دینے کے ساتھ ساتھ عصر حاضر کے سب سے بڑے ناسور اور عظیم فتنہ داعش اور دہشت گردی سے نمٹنے اور اس لعنت سے وطن عزیز اور انسانیت کو بچانے کے لیے ماہرین کے خصوصی محاضرے اور لیکچرز ہوں گے اور ان علماء ، دعاۃ و معلمین کو دہشت گردی کے سد باب کے لیے موثر طریقے بتائے جائیں گے تاکہ وہ اپنے علاقوں میں اس حوالے سے بیداری پیدا کریں اور دہشت گردی کے خاتمے میں اپنا متوقع کردار ادا کریں۔

انہوں نے مزید کہا کہ انسانی خدمات کے فروغ اور دہشت گردی کے خاتمے میں علماء کرام اور مدارس و جامعات کا اہم کردار مسلم ہے ۔ چونکہ ان کی دین داری، شریعت کے احکام سے واقفیت اور دنیوی معاملات سے بھی باخبری کی وجہ سے ملک وسماج میں انہیں غیر معمولی مرتبہ حاصل ہے اور ان کی باتیں غور سے سنی جاتی ہیں، اس لیے وہ اس حوالے سے اپنے خطبات جمعہ، دروس ، مواعظ اور نئی نسل کی تعلیم و تربیت کے ذریعہ موثر کردار ادا کررہے ہیں اور انہیں اچھا ، بہترین، امن پسند اور ذمہ دار شہری بنا رہے ہیں ۔ ان کی ٹریننگ اور تدریب سے ان کی صلاحیتوں اور قوت کار میں یقینا اضافہ ہوگا اور وہ پورے عزم و حوصلے کے ساتھ ان فتنوں کے سد باب کے لیے مزید فرحت و نشاط کے ساتھ کام کرسکیں گے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز