اتر پردیش میں آندھی کا قہر، 19 افراد کی موت ، 100 سے زائد زخمی ، بہرائچ میں سب سے زیادہ 7 ہلاکتیں

May 17, 2017 11:34 PM IST | Updated on: May 17, 2017 11:34 PM IST

لکھنؤ: اتر پردیش کی راجدھانی لکھنؤ سمیت آج مختلف اضلاع میں آئی تیز آندھی اوربارش کی وجہ سے درخت اور دیوار وغیرہ گرنے سے کم از کم 19 افراد کی موت اور 100 سے زائد دیگر زخمی ہو گئے۔ ریاست میں گزشتہ کئی دنوں سے پڑ رہی شدید گرمی سے آندھی اور بارش سے لوگوں کو راحت تو ملی، لیکن طوفان کی تباہی سے کئی اضلاع میں معمولات زندگی درہم برہم ہوگئے۔

بہرائچ سے موصول اطلاع کے مطابق ضلع کے مختلف علاقوں میں آندھی اور طوفان سے کم از کم سات افراد کی موت اورکئی دیگر کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔ آندھی اور بارش کی وجہ سے ضلع میں تقریبا 150 کچے مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔

اتر پردیش میں آندھی کا قہر، 19 افراد کی موت ، 100 سے زائد زخمی ، بہرائچ میں سب سے زیادہ 7 ہلاکتیں

photo : PTI

فرخ آباد سے موصولہ رپورٹ کے مطابق ضلع میں بارش کے ساتھ آئی تیز آندھی میں درخت اور دیوار وغیرہ گرنے سے پانچ افراد کی موت ہو گئی اورتقریبا تیس مویشی بھی ملبہ میں دب کر مر گئے۔ سڑکوں پر درختوں کے ٹوٹ کر گرنے سے بجلی کی سپلائی اور ٹریفک بھی متاثر ہوا۔

مہراج گنج سے موصول اطلاع کے مطابق بجلی گرنے سے ایک شخص کی موت ہو گئی جبکہ پیلی بھیت کے بیسلپور علاقے میں رائے پور گاؤں میں بجلی گرنے سے تین افراد کی موت اور سات دیگرشدید طورپر جھلس گئے۔سیتاپور کے ریوسا علاقے میں آندھی میں ایک نجی اسکول کی سمینٹ کی چادر گر گئی جس سے کئی طلبا زخمی ہو گئے۔

چترکٹ سے ملی اطلاع کے مطابق ضلع میں کئی مقامات پرگرج چمک کے ساتھ بارش ہوئی اور اولے گرے۔اولے گرنے سے ضلع کا کل کا درجہ حرارت 46 ڈگری سیلسیس سے تقریبا 9 ڈگری نیچے گر گیا جس کی وجہ سے لوگوں کو گرمی سے راحت ملی۔ تیز آندھی کی وجہ سے ضلع میں متعدد درخت اور بجلی کے پول بھی اکھڑ گئے۔درخت گرنے سے کئی جگہ راستے بند ہو گئے ہیں اور بجلی کی سپلائی بھی ٹھپ ہو گئی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز