يوگی راج میں ایسڈ اٹیک متاثرہ کنبہ خوف کے سائے میں رہنے پر مجبور

Apr 23, 2017 01:02 PM IST | Updated on: Apr 23, 2017 01:02 PM IST

لکھنو : راجدھانی لکھنؤ میں گزشتہ 23 مارچ کو ایک خاتون کو چلتی ٹرین میں تیزاب پلانے کا واقعہ سامنے آیا تھا، جس کے بعد متاثرہ کو سنگین حالت میں ٹراما سینٹر میں داخل کرایا گیا تھا۔ اتنا ہی نہیں اب دبنگوں کی طرف سے خاتون کی بیٹی کو بھی دھمکیاں دی جا رہی ہیں۔غور طلب ہے کہ متاثرہ پر یہ حملہ ان کی طرف سے کیا گیا تھا، جن کے خلاف 8 سال سے متاثرہ انصاف کے لئے لڑ رہی تھی ۔ واقعہ سے پہلے خاتون کو پولیس تحفظ دینے کی بھی بات کہی گئی تھی، لیکن لکھنؤ پولیس کی طرف سے سیکورٹی مہیا نہیں کرائی گئی۔

وہیں متاثرہ کو وزیر اعلی یوگی کی جانب سے بھی سیکورٹی دینے کی بات کہی گئی تھی، لیکن لکھنؤ پولیس ایس ایس پی منزل سینی کی بھی یقین دہانی اور وزیر اعلی کے حکم کے بعد بھی سیکورٹی مہیا نہیں کرائی گئی ہے ، جس کے بعد متاثرہ خوف کے سائے میں رہنے پر مجبور ہے۔

يوگی راج میں ایسڈ اٹیک متاثرہ کنبہ خوف کے سائے میں رہنے پر مجبور

خیال رہے کہ رائے بریلی کے اوچاهار سے لکھنؤ کے لئے مسافر ٹرین سے آنے والی ایک خاتون چارباغ ریلوے اسٹیشن پر سنگین حالت میں لڑکھڑاتی ہوئی گزشتہ جمعرات کو ملی تھی۔ اس کو دبنگوں نے چلتی ٹرین میں تیزاب پلا دیا تھا اور جان لینے کی دھمکی دے کر فرار ہو گئے تھے۔

اس دوران ایک خاتون داروغہ کی نظر اس پر پڑی ، تو وہ تھانے میں معلومات دینے کے بعد براہ راست اسے لے کر ٹراما سینٹر پهنچي ، جہاں پر اس کا علاج شروع ہوا۔ پولیس نے نامعلوم ملزموں کے خلاف مقدمہ درج کر کے جانچ شروع کر دی ہے۔اس معاملہ کی معلومات میڈیا کے ذریعہ ملنے کے بعد وزیر اعلی آدتیہ ناتھ نے معاملہ کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے ملزموں کی جلد گرفتاری کے لئے اے ڈی جی ریلوے گوپال گپتا کو طلب کیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز