وینکیا کے استعفی کے بعد اسمرتی ایرانی کو ملا وزارت اطلاعات ونشریات کا اضافی چارج

Jul 18, 2017 12:09 PM IST | Updated on: Jul 18, 2017 12:28 PM IST

نئی دہلی۔ این ڈی اے کی طرف سے نائب صدر کے عہدہ کا امیدوار بنائے جانے کے بعد وینکیا نائیڈو نے وزیر کے عہدے سے استعفی دے دیا ہے۔ ان کے استعفی کے بعد مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی کا قد بڑھاتے ہوئے انہیں کپڑا وزارت کے ساتھ اطلاعات و نشریات کی وزارت کا اضافی چارج دے دیا گیا ہے۔ وہیں نریندر سنگھ تومر کو شہری ترقی کی وزارت کا اضافی چارج دیا گیا ہے۔ بتاتے چلیں کہ 2014 میں اقتدار میں آنے کے بعد پی ایم مودی نے اسمرتی ایرانی کو فروغ انسانی وسائل کی وزیر بنایا تھا۔ اس کے بعد ایرانی کی تعلیم اور ڈگری کو لے کر کافی تنازعہ ہوا تھا، اگرچہ حکومت نے انہیں عہدے پر برقرار رکھا تھا۔

گزشتہ سال مرکزی حکومت کی ایک سروے رپورٹ میں انسانی وسائل کی وزارت کے کام کاج کو سب سے کم مارکس ملے تھے۔ گزشتہ سال جولائی میں کابینہ میں اہم تبدیلیاں کرتے ہوئے اسمرتی ایرانی کو کپڑا وزارت دے دی گئی تھی اور ان کی جگہ پرکاش جاوڈیکر کو انسانی وسائل کا وزیر بنایا گیا تھا۔

وینکیا کے استعفی کے بعد اسمرتی ایرانی کو ملا وزارت اطلاعات ونشریات کا اضافی چارج

اب  اسمرتی کو اطلاعات و نشریات کے طور پر ایک بڑی وزارت دی گئی ہے۔ اسے کابینہ میں ایرانی کے قد بڑھنے سے جوڑ کر دیکھا جارہا ہے۔ وہیں، نریندر سنگھ تومر سال 2014 سے کان کنی کی وزارت سنبھال رہے ہیں۔ انہیں وینکیا کے استعفی کے بعد شہری ترقی کی وزارت کا اضافی چارج دیا گیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز