آئی سی ایس ای کی کتاب میں اذان کو صوتی آلودگی بتانے پر چوطرفہ تنقید کے بعد بپلشر نے مانگی معافی ، اگلے ایڈیشن میں تصویر ہٹانے کا وعدہ

Jul 02, 2017 05:26 PM IST | Updated on: Jul 02, 2017 05:26 PM IST

نئی دہلی : آئی سی ایس ای اسکولوں میں پڑھائی جانے والی ایک کتاب میں '' اذان کو صوتی آلودگی کے ذریعہ کے طور پر پیش کئے جانے پر چوطرفہ تنقید کے بعد پبلشر نے معافی مانگی ہے اور وعدہ کیا ہے کہ اگلے ایڈیشن میں تصویر ہٹادی جائے گی ۔ خیال رہے کہ سوشل میڈیا پر لوگوں نے جم کر غصہ کا اظہار کیا اور پبلشر کی چوطرفہ تنقید کی ، جس کے بعد پبلشر نے معافی مانگتے ہوئے تصویر کو اگلے ایڈیشن سے ہٹانے کا وعدہ کیا۔

سیلینا پبلشرز کی جانب سے شائع سائنس کی نصابی کتاب میں صوتی آلودگی کی وجوہات پر ایک باب ہے۔ سوشل میڈیا پر پھیلی تصویر میں ٹرین، کار، ہوائی جہاز اور ایک مسجد کے ساتھ تیز آواز کی عکاسی والے نشان ہیں ، جس کے سامنے ایک ایک شخص دکھائی دے رہا ہے ، جس نے اپنے کان بند کر رکھے ہیں۔ سوشل میڈیا پر لوگوں نے کتاب واپس لینے کے مطالبہ کو لے کر اب ایک آن لائن پٹیشن شروع کی ہے۔

آئی سی ایس ای کی کتاب میں اذان کو صوتی آلودگی بتانے پر چوطرفہ تنقید کے بعد بپلشر نے مانگی معافی ، اگلے ایڈیشن میں تصویر ہٹانے کا وعدہ

پبلیشر ہیمنت گپتا نے سوشل میڈیا پر لکھا کہ '' میں تمام متعلقہ لوگوں کو بتانا چاہتا ہوں کہ ہم کتاب کے آنے والے آیڈیشن میں تصویر تبدیل کر دیں گے۔ '' انہوں نے کہا کہ '' اگر اس سے کسی کے بھی جذبات مجروح ہوئے ہوں ، تو ہم ان سے معافی مانگتے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز