وارانسی میں طلبہ و طالبات نے لگایا یوگی کے خلاف ’گو بیک یوگی‘ کا نعرہ

May 27, 2017 10:31 PM IST | Updated on: May 27, 2017 10:31 PM IST

وارانسی : اترپردیش کے وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ کے دورے کے دوران ان کے خلاف کچھ طلبہ و طالبات نے ’گو بیک یوگی‘ کے نعرے لگاکر آج اپنا احتجاج درج کرایا۔  بھگت سنگھ طلبہ فرنٹ سے منسلک تقریباََ ایک درجن طلبہ نے کاشی ہندو یونیورسٹی (بی ایچ یو) کے صدر دروازے پر ہاتھوں میں تختیاں لیکر مسٹر یوگی کی مخالفت کی۔ پولیس کے تمام حفاظتی انتظامات کے باوجود کچھ طلبہ اچانک مین گیٹ پر آگئے اور زور زور سے ’گو بیک یوگی‘ کے نعرے لگانے لگے۔ پولیس اہلکاروں نے احتجاج کرنے والے طلبہ کو سمجھایا لیکن جب وہ نہیں مانے تو انہیں حراست میں لے لیا گیا۔ حراست کے خلاف طلبہ کے حامیوں نے لنکا تھانہ پر احتجاج کرکے رہائی کا مطالبہ کیا۔

مظاہرین طلبہ کا الزام ہے کہ اترپردیش میں یوگی حکومت کے بننے کے بعد ریاست میں امن و قانون اور مزید خراب ہوتا جارہاہے۔ سہارنپور میں نسلی تشدد لگاتار پھیل رہا ہے۔ لیکن حکومت اسے کنٹرول میں کرنے میں ناکام ثابت ہوئی ہے۔ طلبہ کا الزام ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے لیڈر دلت اور اقلیتوں کے درمیان پھوٹ ڈال کر آپس میں لڑوا ر ہے ہیں۔اس وجہ سے وہاں کشیدہ صورت حال ہے۔

وارانسی میں طلبہ و طالبات نے لگایا یوگی کے خلاف ’گو بیک یوگی‘ کا نعرہ

file photo

اس سے قبل وزیر اعظم نریندر مودی کے رویندرپوری میں واقع پارلیمانی دفتر پر مسٹر یوگی کے پہنچتے ہی مسابقتی امتحان کی تیار کرنے والے طلبہ و طالبات نے نے روزگار دینے اور فیس میں اضافہ کے خلاف مظاہرہ کیا۔

مسٹر یوگی مرکز میں نریندر مودی حکومت کے تین سال کی میعاد پوری ہونے کے موقع پر منعقدہ پروگرام کے علاوہ مرکزی اور ریاستی حکومت کی جانب سے جاری مختلف ترقیاتی اسکیموں کا جائزہ لینے کے دو دن کے دورہ پر کل وارانسی آئے تھے۔ آج وہ بی ایچ یومیں منعقدہ ’سوچھ گنگا کانفرنس‘ میں حصہ لینے سوتنترتا بھون جارہے تھے۔ اسی وقت طلبہ نے احتجاج کیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز