ہوائی اڈہ پر توڑ پھوڑ کرنے والے تلگودیشم پارٹی کے ممبر پارلیمنٹ ریڈی پر سبھی بڑی ایئرلائنزنے لگائی پابندی

Jun 16, 2017 12:40 PM IST | Updated on: Jun 16, 2017 12:40 PM IST

نئی دہلی: وشاكھاپٹنم ہوائی اڈے پر عملے سے زیادتی اور توڑ پھوڑ کرنے والے تلگودیشم پارٹی کے لیڈر جے سي دیواکر ریڈی پر تقریبا تمام بڑی ایئر سروس کمپنیوں نے پابندی لگا دی ہے۔ سول ایوی ایشن کے وزیر اشوک گجپتی راجو نے معاملے کی جانچ کی یقین دہانی کرائی ہے۔ مسٹر راجو نے آج ایک ٹویٹ میں کہا کہ میں نے حقیقت کا پتہ لگانے کے لئے وشاكھاپتنم ہوائی اڈے پر ہوئے پورے واقعہ کی جانچ كراؤں گا اور قانون کے مطابق مناسب کارروائی کو یقینی بناؤں گا۔

مسٹر ریڈی کو جمعرات کےر وز وشاكھاپتنم سے حیدرآباد جانا تھا۔ انہوں نے انڈیگو کی پرواز نمبر 6 ای 608 میں ٹکٹ بک کرائی تھی۔ ایئر لائنز کا کہنا ہے کہ وہ پرواز کے وقت سے 28 منٹ قبل انٹری گیٹ پر پہنچے تھے۔ اصول کے مطابق 45 منٹ پہلے بورڈنگ بند ہو جاتی ہے۔ بورڈنگ سے منع کرنے پر ممبر پارلیمنٹ نے ایئر لائنز کے ملازمین کے ساتھ بدسلوکی کی اور کاؤنٹرپر پڑا پرنٹر نیچے پھینک دیا ۔اس وقت ایئر لائنز نے مسٹر ریڈی کو اسی پرواز میں جانے دیا، لیکن بعد میں ان پر پابندی لگا دی۔

ہوائی اڈہ پر توڑ پھوڑ کرنے والے تلگودیشم پارٹی کے ممبر پارلیمنٹ ریڈی پر سبھی بڑی ایئرلائنزنے لگائی پابندی

اس کے بعد ایئر انڈیا، جیٹ ایئر ویز، اسپائس جیٹ، وستارا اور ایئر ایشیا نے بھی ممبر پارلیمنٹ پر پابندی عائد کر دی۔ مسٹر راجو نے اسی پرواز میں مسٹر ریڈی کو سفر کرنے کی اجازت دینے کے لئے ایئر لائنز پر دباؤ بنانے کے خبروں کی تردید کی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز