اکھا ڑا پریشد کے سر براہ مہنت نریندر گری کا بڑا بیان ، یوگی آدتیہ ناتھ کو چھوڑنی ہوگی اپنی ہندوتو وادی شبیہ

اکھا ڑا پریشد کے سر براہ مہنت نریندر گری نے کہا ہے کہ یو پی میں فرقہ وارانہ ہم آہنگی قائم رکھنا یوگی حکومت کی پہلی ذمہ داری ہے ۔

Mar 20, 2017 07:53 PM IST | Updated on: Mar 20, 2017 07:54 PM IST

الہ آباد : یوگی آدتیہ ناتھ کے وزیر اعلیٰ بننے کے بعد اکھل بھارتیہ اکھاڑا پریشد کا بڑا بیان سامنے آیا ہے ۔ اکھا ڑا پریشد کے سر براہ مہنت نریندر گری نے کہا ہے کہ یو پی میں فرقہ وارانہ ہم آہنگی قائم رکھنا یوگی حکومت کی پہلی ذمہ داری ہے ۔ نریندر گری نے کہا کہ ریاستی حکومت کو تمام مذاہب کے لوگوں کو ساتھ لے کر چلنا ہوگا اور تمام مذاہب کا مساوی طور پر احترام کرنا ہوگا ۔ نریندر گری نے مزید کہا کہ کہ سبھی فرقوں میں اعتماد پیدا کرنے کے لئے یوگی آدتیہ ناتھ کو اپنی ’’ ہندو تو وادی ‘‘ شبیہ چھوڑنی ہوگی ۔

خیال رہے کہ یوگی آدتیہ ناتھ ہمیشہ مسلم مخالف بیا نوں کے لیے ہی موضوع بحث رہے ہیں اور الیکشن کے دوران بھی انہوں نے کوئی کسر نہیں چھوڑی تھی ۔ ان کے اقتدار میں آنے کے بعد کہیں مسجد میں ان کے حامی بی جے پی اور ہندو واہنی کے جھنڈے لگا رہے ہیں ، تو کہیں مسلمانوں کی ٹوپیاں اچھال ان کی پٹائی کی جا رہی ہے۔

اکھا ڑا پریشد کے سر براہ مہنت نریندر گری کا بڑا بیان ، یوگی آدتیہ ناتھ کو چھوڑنی ہوگی اپنی ہندوتو وادی شبیہ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز