باپ بیٹے کی لڑائی کے سبب سماج وادی پارٹی تقسیم کی دہلیز پر، نوراتری میں نئی پارٹی کے اعلان کا امکان

Sep 18, 2017 06:21 PM IST | Updated on: Sep 18, 2017 07:08 PM IST

لکھنو: سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے سربراہ ملائم سنگھ یادو اور ان کے بھائی شیوپال سنگھ یادو آئندہ نوراتری میں نئی پارٹی کا اعلان کرسکتے ہیں جس سے پارٹی کے تقسیم ہونے کے آثار نظر آرہے ہیں ایس پی کی قومی مندوبین کانفرنس آئندہ پانچ اکتوبر کو آگرہ میں بلائی گئی ہے سیاسی حلقوں میں قیاس آرائی کی جارہی ہے کہ قومی کانفرنس سے پہلے ہی ملائم سنگھ یادو نئی پارٹی بنانے کا فیصلہ کرسکتے ہیں۔

ایس پی کے صدر اکھیلیش یادو کے چچا شیوپال سنگھ یادو کے مطابق جلد ہی نئی پارٹی قائم کرنے کا اعلان کیا جائے گا ان کا کہنا تھا کہ وہ اور نیتا جی (ملائم سنگھ یادو) چاہتے ہیں کہ پارٹی اور کنبہ ایک رہے لیکن اکھلیش یادو اپنی ضد پر اڑے ہیں ان کی ضد کی وجہ سے مجبور ہوکر نئی پارٹی قائم کرنے کابارے میں سوچنا پڑرہا ہے ایس پی کی ریاستی کانفرنس 23ستمبر کو لکھنؤ میں اور قومی کانفرنس پانچ اکتوبر کو آگرہ میں ہے۔ آگرہ سے موصولہ رپورٹ کے مطابق قومی کانفرنس کے لئے لگنے والے ہورڈنگس میں ملائم سنگھ یادو کی تصویر نہیں ہوگی۔

باپ بیٹے کی لڑائی کے سبب سماج وادی پارٹی تقسیم کی دہلیز پر، نوراتری میں نئی پارٹی کے اعلان کا امکان

پارٹی کے سینئر لیڈر اور ملائم سنگھ یادو کے قریبی نے یو این آئی کو بتایا کہ نئی پارٹی کا نام سماج وادی سیکولر فرنٹ ہوسکتا ہے اور اس کا اعلان نوراتری میں کیا جاسکتا ہے۔ ملائم سنگھ یادو اور شیوپال سنگھ یادو کے حامیوں نے اضلاع میں اپنے لوگوں کی نشاندہی کرنا شروع کردیا ہے۔

ان کا دعوی تھا کہ مسٹر اکھیلیش یادو کے نریش اتم سمیت ان کے کئی قریبی اپنے اضلاع میں اسمبلی کی ایک بھی سیٹ جیتانے کی حالت میں نہیں ہیں۔ افسوس کی بات تو یہ ہے کہ ایسے لوگ ’نیتاجی‘ پر انگلی اٹھا رہے ہیں۔ ادھر اکھیلیش یادو کے حامی رکن اسمبلی سنیل سنگھ کا کہنا ہے کہ پارٹی مسلسل مضبوط ہورہی ہے۔ جس کو جہاں جانا ہو جائے۔ 2019کے لوک سبھا انتخابات میں پارٹی کی کارکردگی بہتر رہے گی اور 2022میں ایس پی کی حکومت قائم ہوگی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز