نتیش سے اصولوں کی لڑائی، معطلی سے خوفزدہ ہونے والے نہیں: علی انور

Aug 12, 2017 08:38 PM IST | Updated on: Aug 12, 2017 08:39 PM IST

نئی دہلی۔ راجیہ سبھا میں جنتا دل یونائٹیڈ کے ڈپٹی لیڈر کے عہدے سے معطل کئے گئے پارٹی کے باغی لیڈر علی انور  نے پارٹی صدر اور بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار کے خلاف اصولوں کی جنگ چھیڑنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اس لڑائی کو عوام کے درمیان لے کر جائیں گے۔ غور طلب ہے کہ کل کانگریس کی قیادت میں 16 اپوزیشن جماعتوں کے اجلاس میں حصہ لینے کی وجہ سے مسٹر انور کو پارلیمانی پارٹی سے معطل کر دیا گیا تھا اور پارٹی کے سینئر لیڈر مسٹر شرد یادو کو بھی راجیہ سبھا میں پارلیمانی پارٹی لیڈر کے عہدے سے ہٹا دیا گیا۔

پسماندہ مسلمانوں کے لیڈر مسٹر انور نے مسٹر کمار سے اپنی لڑائی کو انفرادی نہیں بلکہ اصولوں کی جنگ قرار دیتے ہوئے صحافیوں سے کہا کہ وہ راجیہ سبھا میں پارٹی کے لیڈر مسٹر یادو کے کہنے پر ہی اپوزیشن کے اجلاس میں حصہ لینے گئے تھے کیونکہ کل تک ایوان میں وہی لیڈر تھے اور وہ پارٹی کے بانی بھی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح انہوں نے اجلاس میں حصہ لے کر کوئی غلط کام نہیں کیا لیکن مسٹر کمار نے انہیں فورا پارلیمانی پارٹی سے معطل کر دیا۔ اصولوں کے لئے کسی بھی طرح کی قربانی چھوٹی ہوگی۔ انہوں نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ وہ پارٹی سے معطلی کے سلسلے میں بھی خوفزدہ ہونے والے نہیں ہیں۔

نتیش سے اصولوں کی لڑائی، معطلی سے خوفزدہ ہونے والے نہیں: علی انور

جے ڈی یو کے راجیہ سبھا ایم پی علی انور انصاری نئی دہلی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے۔

یہ پوچھے جانے پر کہ کیا وہ لوگ جنتا دل یو سے نکالے جانے کی صورت میں راشٹریہ جنتا دل میں شامل ہوں گے۔ مسٹر انور نے کوئی براہ راست جواب نہیں دیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ لوگ کالج، یونیورسٹی اور گاؤں گاؤں جا کر عوام کے سامنے اپنی بات رکھیں گے اور سول سوسائٹی اور نوجوانوں و طالب علموں کو متحرک کریں گے اور ملک کی مشترکہ ورثے کو بچانے کے لئے سول سوسائٹی کی تحریک شروع کریں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز