فلسفہ زندگی کے مسائل کی منظم تلاش اور کائنات کو سمجھنے کا بہترین ذریعہ: ضمیر الدین شاہ

Mar 28, 2017 08:17 PM IST | Updated on: Mar 28, 2017 08:17 PM IST

علی گڑھ ۔ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے ویمنس کالج کے فلاسفی سیکشن کے زیرِ اہتمام ’’ اسلامی فلسفہ: مسائل اور چیلنجیز‘‘ موضوع پر منعقدہ دو روزہ قومی سیمینار کے افتتاحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وائس چانسلر لیفٹیننٹ جنرل ضمیر الدین شاہ( ریٹائرڈ) نے کہا کہ فلسفہ زندگی کے مسائل کی ایک منظم تلاش اور کائنات کو سمجھنے کا بہترین ذریعہ ہے اور یہ جاننا ضروری ہے کہ سماج میں کیا رونما ہورہا ہے۔ جنرل شاہ نے اسلام میں فلسفہ پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اچھی بات یہ ہے کہ مساجد سے وابستہ مدارسِ اسلامیہ دین کے ساتھ دنیا کی معلومات بھی فراہم کر رہے ہیں اور ان مدارس میں زیرِ تعلیم بچوں کو اگر جدید تعلیم بھی مہیا کرائی جائے تو وہ سماج میں اہم رول ادا کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسلام میں چیزوں کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کی تلقین کی گئی ہے اور فلسفہ عین اسلام کے موافق ہے۔

کلیدی خطبہ پیش کرتے ہوئے شعبۂ فلسفہ کے سربراہ پروفیسر طارق اسلام نے کہا کہ اسلامی فلسفہ کے مقابل کئی چیلنجیز ہیں اور اسلامی فلسفہ میں سیاسی فیصلوں میں غیر جانب دار بنے رہنا ممکن ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مغرب کا مشرق کے تئیں اورینٹل ازم کا جو نظریہ تھا اب وہ اس سے ہٹ کر اسلام کے تئیں ہوگیا ہے ایسے میں اس بات پر سنجیدگی کے ساتھ غور کرنا ہوگا کہ ان کے اس نظریہ کو کیسے دور کیا جائے۔مہمانِ خصوصی یو جی سی ایچ آر ڈی سینٹر کے ڈائرکٹر پروفیسر اے آر قدوائی نے کہاکہ11ویں صدی میں اسلامی فلسفیوں نے تب مغرب کی رہنمائی کی تھی جب کہ مغرب جہالت کے اندھیروں میں گم تھا۔ یہاں تک کہ اسلامی فلسفیوں نے مغرب کو ایک فلسفیانہ بنیاد فراہم کی اور اس دور میں کوئی بھی حوالہ ان کی مثال کے بغیر پیش نہیں کیاجاتا تھاجبکہ مغرب نے یہ سلوک کیا کہ اسلامی فلسفیوں کی شناخت تبدیل کردی۔

فلسفہ زندگی کے مسائل کی منظم تلاش اور کائنات کو سمجھنے کا بہترین ذریعہ: ضمیر الدین شاہ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز