گوشت کی دکانوں کے سلسلہ میں ہائی کورٹ نے لکھنؤ میونسپل اور ریاستی حکومت سے طلب کیا جواب

Mar 28, 2017 08:28 AM IST | Updated on: Mar 28, 2017 08:28 AM IST

لکھنؤ۔ الہ آباد ہائی کورٹ کی لکھنؤ بنچ نے گوشت کی دکانوں کے معاملے میں اہم فیصلہ دیتے ہوئے میونسپل لکھنؤ اور حکومت سے معلومات طلب کی ہے کہ ابھی تک گوشت کی دکانوں کو لائسنس کی تجدید کئے جانے کے معاملے میں کیا کیاگیا ہے ۔ عدالت نے یہ بھی پوچھا ہے کہ درخواست گزاروں کی طرف سے دکانوں کے لائسنس کی تجدید کئے جانے کے مطالبے کے باوجود بھی ابھی تک ایسا کیوں نہیں کیا گیا۔ جسٹس امریشور پرتاپ شاہی اور جسٹس سنجے هركولي کی بینچ نے یہ حکم شہاب الدین اور دیگر کی جانب سے دائر درخواست پرجاری کئے ہیں۔ پٹیشن دائر کرکے کہا گیا تھا کہ عرضی گزاروں نے شہر میں چل رہی گوشت کی دکانوں کے لائسنس تجدید کئے جانے کا مطالبہ میونسپل سمیت ریاستی حکومت سے کیا تھا۔ اس میں کہا گیا ہے کہ سال 2014 میں گوشت کی دکانوں کے لائسنس کی مدت پوری ہو گئی تھی۔ عر ضی گزاروں نے درخواست دے کر لائسنس کی تجدید کا مطالبہ میونسپل سے کیا تھا۔

درخواست میں الزام لگایا گیا ہے کہ ان لوگوں نے متعدد دفعہ دکانوں کے لائسنس کی تجدید کا مطالبہ کیا لیکن کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ تجدید نہ ہو پانے کی وجہ سے گوشت کی دکانیں نہیں چل پا رہی ہیں۔ عرضی گزار شہاب الدین اور دیگر نے ہائی کورٹ میں عرضی دائر کرکے مطالبہ کیا ہے کہ دکانوں کو لائسنس کی تجدید کا حکم جاری کیا جائے۔ عدالت نے میونسپل لکھنؤ سے پوچھا ہے کہ اس معاملے میں ابھی تک کیا کارروائی کی گئی۔ اگلی سماعت پر عدالت کو بتائیں۔ عدالت نے معاملے کی اگلی سماعت تین اپریل کو مقرر کی ہے۔

گوشت کی دکانوں کے سلسلہ میں ہائی کورٹ نے لکھنؤ میونسپل اور ریاستی حکومت سے طلب کیا جواب

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز