الہ آباد ہائی کورٹ نے سنی وقف بورڈ کو احاطے میں تعمیرمسجد کو ہٹانے کا حکم دیا

الہ آباد۔ الہ آباد ہائی کورٹ نے آج سنی وقف بورڈ کو عدالت کے احاطہ میں واقع مسجد کو تین ماہ کے اندر ہٹانے کا حکم دیا ہے۔

Nov 08, 2017 09:05 PM IST | Updated on: Nov 08, 2017 09:05 PM IST

الہ آباد۔ الہ آباد ہائی کورٹ نے آج سنی وقف بورڈ کو عدالت کے احاطہ میں واقع مسجد کو تین ماہ کے اندر ہٹانے کا حکم دیا ہے۔ ہائی کورٹ کے احاطے میں بنی مسجد کو تجاوزات قرار دیتے ہوئے عدالت نے سنی وقف بورڈ کو تین ماہ کے اندر تعمیر ہٹاکر قبضہ واپس کرنے کا حکم دیا۔عدالت نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ بورڈ  تین ماہ کے اندر تعمیرات کو ہٹا کر اس زمین کو ہائی کورٹ کے حوالے کرے یعنی اس زمین پر ہائی کورٹ کا قبضہ دلائے۔ اگر بورڈ قبضہ نہیں ہٹاتا ہے تو اس کے بعد ہائی کورٹ کے ڈائرکٹر جنرل پولیس فورس کے ذریعہ زمین پر قبضہ لینے کی کاروائی کریں ۔

چیف جسٹس ڈی بی بھونسلے اور جسٹس ایم کے گپتا کی بنچ نے آج ایڈوکیٹ ابھیشکیک شکل کے ذریعہ داخل کی گئی عرضی پر یہ فیصلہ سنایا ۔عدالت نے مسجد کی انتظامیہ کمیٹی کو دوسری جگہ زمین کے لئے ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کوعرضی دینے اور اس کی تعمیر آٹھ ہفتوں میں کرنے کا حکم دیا۔ عدالت نے کہا کہ مستقبل میں ہائی کورٹ کی زمین پر عبادت یا نماز پڑھنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

الہ آباد ہائی کورٹ نے سنی وقف بورڈ کو احاطے میں تعمیرمسجد کو ہٹانے کا حکم دیا

الہ آباد ہائی کورٹ: فائل فوٹو۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز