امانت اللہ خان کو چیف سکریٹری کے ساتھ مارپیٹ معاملے میں ملی ضمانت

Mar 12, 2018 11:59 AM IST | Updated on: Mar 12, 2018 11:59 AM IST

نئی دہلی۔ دلی میں چیف سکریٹری انشو پرکاش کے ساتھ مبینہ مار پیٹ کے معاملہ میں عام آدمی پارٹی کے ایم ایل اے امانت اللہ خان کو دہلی ہائی کورٹ سے بڑی راحت ملی ہے۔ عدالت نے امانت اللہ کو ضمانت دے دی ہے۔ قبل ازیں امانت اللہ کو 14 دن کے لئے عدالتی حراست میں بھیج دیا گیا تھا۔

بتا دیں کہ 23 ​​فروری کو دلی کے چیف سکریٹری انشو پرکاش کے ساتھ مبینہ بدسلوکی اور مارپیٹ کے معاملے میں گرفتار عآپ ایم ایل ایز کی ضمانت کی درخواست مسترد کردی گئی تھی۔ ایم ایل اے امانت اللہ خان اور پرکاش جروال کو 14 دن کے لئے عدالتی حراست میں بھیج دیا گیا تھا۔ ان پر الزام ہے کہ دہلی کے چیف سکریٹری انشو پرکاش کے ساتھ انہوں نے مار پیٹ اور بدسلوکی کی ہے۔

امانت اللہ خان کو چیف سکریٹری کے ساتھ مارپیٹ معاملے میں ملی ضمانت

عام آدمی پارٹی کے ایم ایل اے امانت اللہ خان: فائل فوٹو، اے این آئی۔

چیف سیکرٹری نے الزام لگایا تھا کہ دیر رات وزیراعلی اروند کیجریوال کی رہائش گاہ پر انہیں میٹنگ کے لئے بلایا گیا تھا۔ دریں اثنا، عام آدمی پارٹی کے ارکان اسمبلی نے ان پر سرکاری اشتہارات جاری کرنے کے لئے دباؤ بنایا۔ انکار کرنے پر ان کے ساتھ مار پیٹ اور بدسلوکی کی گئی۔ چیف سیکریٹری نے دہلی پولیس میں اس کی شکایت کی۔ اس کے بعد اوکھلا سے ایم ایل اے امانت اللہ خان، دیولی سے رکن اسمبلی پرکاش جروال سمیت دیگر ارکان کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز