کیرالہ میں سیاسی قتل کی وارداتیں بائیں بازو کو بے نقاب کررہی ہیں: امت شاہ

Oct 08, 2017 03:01 PM IST | Updated on: Oct 08, 2017 03:01 PM IST

نئی دہلی۔ بھارتیہ جنتا پارٹی کے صدر امت شاہ نے کیرالہ میں پارٹی اور راشٹریہ سوئم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) کے کارکنوں کی سیاسی ہلاکتوں پر ریاست کی کمیونسٹ حکومت پر سخت حملہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ حقوق انسانی کا ڈینگ مارنے والوں کی اصلیت کو بے نقاب کررہی ہیں۔ مسٹر شاہ کیرالہ میں واقعات کے خلاف آج یہاں بی جے پی کی نکالی گئی ’جن رکشا یاترا‘ کے موقع پر کارکنوں سے خطاب کررہے تھے۔ بی جے پی صدر نے کہا کہ مارکسوادی کمیونسٹ پارٹی کے لوگ خود کو حقوق انسانی کا علمبردار سمجھتے ہیں کہ کیرالہ میں جس طرح کھلے عام بی جے پی اور آر ایس ایس کے کارکنوں کا قتل کیا جارہاہے وہ ان کی اصلیت کو بے نقاب کررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ وہ لوگ ہیں جو اپنی سہولت اور پسند کے حساب سے حقوق انسانی کی باتیں کرتے ہیں۔ یہ حقوق انسانی کے اتنے ہی ’حمایتی ہیں تو پھر کیرالہ میں اپنے لال بھائیوں‘ کے خلاف موم بتی لیکر کیوں نہیں نکلتے۔

بی جے پی صدر نے کہا کہ کمیونسٹ پارٹی کو شرم آنی چاہئے کیونکہ جب سے کیرالہ میں ان کی سرکار بنی ہے بی جے پی اور آر ایس ایس کارکنوں کے 120سے زائد لوگوں کا قتل ہو چکا ہے۔ بیشتر قتل تو وزیر اعلیٰ کی رہائش گاہ کے آس پاس ہوئے ہیں۔ گولی مار کر قتل کیا جاتا ہے لیکن ’ہمارے کارکنوں کو تو ٹکڑے ٹکڑے ‘کردیا گیا۔ اس سے زیادہ بہیمیت اور کیا ہو سکتی ہے لیکن پھر بھی ہم قربانی دینے سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ کناٹ پلیس کے سینٹرل پارک سے کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا (سی پی ایم) کے گول مارکیٹ میں واقع دفتر تک نکالی گئی دو کلو میٹر کی اس یاترا میں مسٹر شاہ کے علاوہ پارٹی کے ریاستی صدر منوج تیواری،دہلی انچارج شیام جاجو،پارٹی کے عہدیداران ،ممبران پارلیمنٹ و اسمبلی،کارپوریشن کے کونسلرز اور ریاستی عہدیداران سمیت تقریباً 25 ہزار کارکنان شامل ہوئے۔

کیرالہ میں سیاسی قتل کی وارداتیں بائیں بازو کو بے نقاب کررہی ہیں: امت شاہ

بی جے پی صدر نے کہا کہ کمیونسٹ پارٹی کو شرم آنی چاہئے کیونکہ جب سے کیرالہ میں ان کی سرکار بنی ہے بی جے پی اور آر ایس ایس کارکنوں کے 120سے زائد لوگوں کا قتل ہو چکا ہے۔

اپنی پارٹی کارکنوں کی مسلسل ہونے والی سیاسی ہلاکتوں کے خلاف بی جے پی نے تین اکتوبر کو کیرالہ کے وزیر اعلیٰ پنرائی وجین کے آبائی ضلع کنور سے ’جن رکشا یاترا‘ کی شروعات کی تھی۔ مسٹر شاہ نے اس یاترا کا آغاز کیا تھا، جس کے بعد اس یاترا میں اترپردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے بھی شرکت کی تھی۔ وہیں پارٹی کے دوسرے سینئر لیڈر اور مرکزی وزیر بھی اس یاترا میں الگ الگ مقامات پر شرکت کرتے رہے ہیں۔ یہ یاترا 17اکتوبر تک چلے گی۔ دراصل،کیرالہ میں کمیونسٹ پارٹی کی حکومت ہے جہاں آئے دن بی جے پی اور کمیونسٹ کارکنوں کے درمیان خونی لڑائیاں ہوتی رہتی ہیں۔ اس لڑائی میں کئی بی جے پی کارکنان مارے جا چکے ہیں ۔ بی جے پی نے اپنے کارکنوں کے خلاف ہونے والے ان واقعات کو سیاسی قتل قرار دیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز