بابری مسجد انہدام کیس پر سپریم کورٹ کے فیصلہ کے بعد بی جے پی میں ہلچل ، شاہ کی مودی سے ملاقات ، اڈوانی سے ملے جوشی

Apr 19, 2017 09:25 PM IST | Updated on: Apr 19, 2017 10:32 PM IST

نئی دہلی: ایودھیا میں چھ دسمبر 1992 کو بابری مسجد ڈھانچے کے انہدام پر سپریم کورٹ کی طرف سے بھارتیہ جنتا پارٹی کے سینئر لیڈروں لال کرشن اڈوانی، ڈاکٹر مرلی منوہر جوشی اور اوما بھارتی کے خلاف سازش تیار کرنے کے الزامات طے کرنے کے احکامات کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی نے یہاں پارٹی کے اعلی لیڈروں کے ساتھ طویل تبادلہ خیال کیا۔ ادھر دیر شام کو ڈاکٹر مرلی منوہر جوشی، مسٹر اڈوانی کے گھر پہنچے اور دونوں بزرگ لیڈروں نے سپریم کورٹ کے فیصلے پر باہمی تبادلہ خیال کیا۔

ذرائع نے یہاں بتایا کہ وزیر اعظم کی رہائش گاہ پر شام کوہوئی میٹنگ میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے صدر امت شاہ، مرکزی وزیر راجناتھ سنگھ، ارون جیٹلی، نتن گڈکری اور ایم وینکیا نائیڈو شامل ہوئے۔ذرائع کے مطابق تقریبا ایک گھنٹے تک جاری رہی اس میٹنگ کے بعد مسٹر شاہ اور محترمہ بھارتی کے درمیان ٹیلی فون پر بات چیت بھی ہوئی۔

بابری مسجد انہدام کیس پر سپریم کورٹ کے فیصلہ کے بعد بی جے پی میں ہلچل ، شاہ کی مودی سے ملاقات ، اڈوانی سے ملے جوشی

نریندر مودی، امت شاہ: فائل فوٹو

ذرائع کے مطابق بعد میں مسٹر جیٹلی، مسٹر سنگھ، مسٹر وینکیا نائیڈو، محترمہ سشما سوراج، اور ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے وزیر اعظم سے ملاقات کی۔ بتایا گیا ہے کہ اس میٹنگ میں جموں کشمیر کے معاملے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔وادی کشمیر میں ہوئے ضمنی انتخابات میں حکمران اتحاد کی شکست اور وادی میں امن و قانون کی صورتحال پر سیاست اس وقت عروج پر ہے۔

محترمہ بھارتی نے سپریم کورٹ کا فیصلہ آنے کے فورا بعد منعقد پریس کانفرنس میں آج رات ایودھیا جانے اور سریو ندی سے رام للا کے عارضی مندر اور ہنومان گڑھی کے مندر کے درشن کرنے کا اعلان کیا تھا لیکن شام کو محترمہ بھارتی نے ایودھیا جانے کا فیصلہ ملتوی کر دیا۔ سمجھا جاتا ہے کہ مسٹر شاہ نے انہیں ابھی ایودھیا نہ جانے کا مشورہ دیا ہے۔ اگرچہ محترمہ بھارتی نے شام کو ایک ریلیز جاری کرکے کہا کہ ایودھیا ان کے لیے آستھا کا معاملہ ہے اور میڈیا رپورٹوں کو دیکھ کر لگا کہ ان کا دورہ ذاتی نہ ہوکر ایک سیاسی واقعہ بن جائے گا تو انہوں نے ایودھیا کل نہ جاکر کچھ دن بعد جانے کا فیصلہ کیا ہے۔ وہ اب دہلی میونسپل کارپوریشن کے انتخابات کی تشہیر میں شامل ہوں گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز