عمر خاں کو پیٹ پیٹ کر قتل کردینے کے سلسلہ میں اے ایم یو طلباء کا احتجاجی مظاہرہ

Nov 15, 2017 01:35 PM IST | Updated on: Nov 15, 2017 01:35 PM IST

علی گڑھ ۔ مسلم یونیورسٹی طلباء کی جانب سے  گؤ رکشکوں کے ذریعہ الور، راجستھان میں 35 سالہ عمر خاں کو مبینہ طور پر پیٹ پیٹ کر قتل کرنے کے سلسلے میں  احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ۔ طلباء کا کہنا تھا کہ جس طرح گئو رکشکوں نے گذشتہ 13 اپریل پہلو خاں کا قتل کیا تھا اسی طرح عمر خاں کو قتل کیا گیا ہے۔ ملک کی مرکزی حکومت کے ساتھ ساتھ راجستھان حکومت اس طرح کے واقعات کو روکنے میں پوری طرح سے ناکام ثابت ہوئی ہے ۔ وہیں طلباء نے الزام عائد کیا کہ آر ایس ایس اور بھارتیہ جتنا پارٹی کی سیاست کا مقصد ہی نفرتوں کو پروان چڑھانا ہے ۔ اس موقع پرمرکزی حکومت، آر ایس ایس اورراجستھان حکومت کے خلاف جم کرنعرے بازی کی گئی ۔ طلبا ہاتھوں میں پوسٹر لئے ہوئے تھے ۔

عمر خاں کو پیٹ پیٹ کر قتل کردینے کے سلسلہ میں اے ایم یو طلباء کا احتجاجی مظاہرہ

مسلم یونیورسٹی طلباء نے احتجاجی مارچ نکالتے ہوئےکہا کہ  مرکز میں جب سے بی جے پی حکومت بنی ہے ، تب سے اس طرح کے واقعات رونما ہو رہے ہیں اورحکومت اسکو روکنے میں ناکام ہے ۔ مذکورہ سانحہ کے خلاف طلباء نے مولانا آزاد لائبریری سے سیدنا طاہر سیف الدین چوک تک ایک احتجاجی مارچ نکال کرحکومت کی پالیسوں کے خلاف زبردست مظاہرہ کیا۔ طلباء لیڈران نے کہا کہ جب سے مرکز میں بھارتیہ جتنا پارٹی کی زیر قیادت مودی حکومت اوراترپردیش میں یوگی حکومت تشکیل ہوئی ہے تب سے شرپسند عناصر بے لگام ہوگئے ہیں ۔ طلبا نے مطالبہ کیا کہ راجستھان پولس کے ذمہ دار افسران کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائے ۔ انھوں نے کہا کہ ملک کے کشیدہ حالات کیلئے صر ف اور صرف آر ایس ایس اور بی جے پی ذمہ دار ہیں۔ انھوں نے جس طرح سے نفرت کی سیاست شروع کی ہے اس کو محبت سے ہی ختم کیا جاسکتا ہے۔

طلباء لیڈران نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی ہندو راشٹرکے ایجنڈے کے تحت کام کررہی ہے ۔ گائے کی حفاظت کے نام پر مسلمانوں کے خلاف ایک نفرت آمیز تحریک چلا کر بے گنا ہ لوگوں کا قتل کیا جارہا ہے۔ عمر خاں کا قتل بھی اسی مہم کا ایک حصہ ہے ۔ راجستھان پولس جانبداری سے کام لیکر پورے معاملے کو دبانے کی کوشش کررہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز