سرسید دو صد سالہ یوم پیدائش دو روزہ ایلومنائی میٹ اے ایم یو کے کینیڈی آڈیٹوریم میں شروع

Oct 16, 2017 02:51 PM IST | Updated on: Oct 16, 2017 02:51 PM IST

علی گڑھ ۔ سرسید دو صد سالہ یوم پیدائش دو روزہ ایلومنائی میٹ 2017،یونیورسٹی کے کینیڈی آڈیٹوریم میں جوش و خروش کے ماحول میں شروع ہوئی۔ جس میں ملک و بیرونِ ملک سے بڑی تعداد میں سابق طلبہ شریک ہو رہے ہیں۔ ایلومنائی میٹ کا باقاعدہ افتتاح روایتی انداز میں کل کینیڈی ہال میں عمل میں آیا۔ ملک و بیرون ملک سے جمع ہوئے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے فارغین کے لئے یہ ایک یادگار موقع تھا۔ یہ دو روزہ ایلومنائی میٹ پیر 16؍اکتوبر2017ء کو اختتام کو پہنچے گی۔

افتتاحی تقریب کی صدارت کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے کہا کہ 1875ء میں محمدن اینگلو اورینٹل کالج کے طور پر قائم ہونے والا ادارہ اپنے فارغین کی محنتوں اور کاوشوں کی بدولت 1920ء میں سنٹرل یونیورسٹی کی شکل اختیار کرگیا۔ یہ خوشی کا موقع ہے کہ امریکہ، یوروپ، مشرق وسطیٰ، ماریشش اور دیگر خطوں سے اے ایم یو کے فارغین یہاں جمع ہوکر ایک دوسرے سے مربوط ہورہے ہیں اور اپنی مادر علمی سے رشتہ استوار کررہے ہیں اور اس کے فروغ میں اپنا بھرپور تعان بھی پیش کر رہے ہیں۔ وائس چانسلر نے کہا کہ اے ایم ایلومنائی ، علی گڑھ اوپن یونیورسٹی کے توسط سے یونیورسٹی کے موجودہ طلبہ کو اپنے تجربہ اور مہارت سے مستفید کررہے ہیں اور اس طرح اپنی مادر علمی سے سچی وابستگی کا حق ادا کررہے ہیں۔ علی گڑھ اوپن یونیورسٹی ، فیڈریشن آف علی گڑھ ایلومنائی ایسوسی ایشنس،نارتھ امریکہ کے تعاون سے شروع کیا گیا ایک قدم ہے۔

سرسید دو صد سالہ یوم پیدائش دو روزہ ایلومنائی میٹ اے ایم یو کے کینیڈی آڈیٹوریم میں شروع

پروفیسر طارق منصور نے کہا کہ انھوں نے ایلومنائی افیئرس کمیٹی کی شاخیں یونیورسٹی کی مختلف فیکلٹیوں کے سبھی شعبوں میں قائم کی ہیں جو ایلومنائی افیئرس کمیٹی کی مرکزی باڈی سے مربوط ہیں۔

پروفیسر طارق منصور نے کہا کہ انھوں نے ایلومنائی افیئرس کمیٹی کی شاخیں یونیورسٹی کی مختلف فیکلٹیوں کے سبھی شعبوں میں قائم کی ہیں جو ایلومنائی افیئرس کمیٹی کی مرکزی باڈی سے مربوط ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اس سے دنیا میں پھیلے اے ایم یو فارغین کا تفصیلی ڈیٹا بیس اور ایلومنائی ڈائرکٹری تیار کرنے میں مدد مل رہی ہے۔ پروفیسر منصور نے بتایا کہ سرسید اینڈاؤمنٹ فنڈ بھی تشکیل دیا گیا ہے جس میں یونیورسٹی کے اساتذہ و ملازمین اور اے ایم یو برادری سرگرم حصہ لے رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس فنڈ کے توسط سے سرسید کے مشن کے تئیں بیداری پیدا ہوسکے گی۔ پروفیسر منصور نے کہا کہ یونیورسٹی کے طلبہ اور اساتذہ کی کاوشوں سے اعلیٰ تعلیمی معیار کو حاصل کرکے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی دوبارہ قومی و عالمی رینکنگ ایجنسیوں کے ذریعہ ٹاپ پر آئی ہے۔

پروگرام کے مہمانِ خصوصی قومی اقلیتی کمیشن کے سابق چیئرمین پروفیسر طاہر محمود نے کہا کہ ان کے خاندان کی چار نسلیں اے ایم یو میں تعلیم حاصل کرچکی ہیں۔ پروفیسر طاہر محمود نے کہا کہ طالب علم اور استاد کی حیثیت سے ان کے ذریعہ گزارے گئے یاد گار لمحات دیگر مقامات پر بسر کئے گئے لمحات سے زیادہ یادگار ہیں۔ انہوں نے طلبہ سے کہا کہ وہ خود کو پسماندہ محسوس نہ کریں بلکہ ہمیشہ بہتر مظاہرہ کی کوشش کریں۔

مِنترا کے سینئر نائب صدر امریش کنگھے نے کہا کہ انہیں اس بات پر فخر ہے کہ انہوں نے اسکول سے بی ٹیک تک کی تعلیم اسی ادارہ میں حاصل کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اے ایم یو میں جو ان کی پرورش ہوئی اسی کے سبب وہ اس مقام تک پہنچے ہیں اور انہیں گوگل اور منترا نے ملازمت بھی آفر کی۔ انہوں نے طلبہ سے کہا کہ ہمیشہ بلند سوچیں اور زندگی میں اعلیٰ ہدف حاصل کرکے اپنی توجہ اس پر مرکوز کریں۔

دو ہزار دس بیچ کے آئی اے ایس افسر مسٹر ابو عمران نے کہا کہ سرسید کی یہ فکر تھی کہ مذہبی تفریق کی سیاسی اور قومی سطح پر کوئی اہمیت نہیں ہونی چاہئے۔ اے ایم یو ایلومنائی جاوید اختر اور مہروز علی نے سوشل نیٹ ورک ویب سائٹ علیگ کنیکٹ کی رونمائی کے لئے وائس چانسلر کو دعوت دی۔ انہوں نے بتایا کہ یہ ویب سائٹ دنیا بھر میں پھیلے اے ایم یو کے سابق طلبہ کو آپس میں جوڑنے کا کام کرے گی۔ اس موقع پر سوشل نیٹ ورک پر مبنی ویڈیو کی بھی نمائش کی گئی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز