اے ایم یو کو گرین کیمپس کے طور پر فروغ دینے کیلئے تحفظ  توانائی پر توجہ ترجیحات میں شامل : طارق منصور

وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے کہا کہ یونیورسٹی کو گرین کیمپس کے طور پر فروغ دینے کے لئے توانائی کے تحفظ پر توجہ مرکوز کرنایونیورسٹی کی ترجیحات میں شامل ہے

Dec 14, 2017 06:27 PM IST | Updated on: Dec 14, 2017 06:27 PM IST

علی گڑھ: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے الیکٹرکسٹی شعبہ کے زیرِ اہتمام ’’ِ قومی توانائی تحفظ یوم‘‘ کے موقع پر یونیورسٹی پالی ٹیکنک کے آڈیٹوریم میں ایک پروگرام کا انعقاد عمل میں آیا جس کی صدارت کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے کہا کہ یونیورسٹی کو گرین کیمپس کے طور پر فروغ دینے کے لئے توانائی کے تحفظ پر توجہ مرکوز کرنایونیورسٹی کی ترجیحات میں شامل ہے اور اس کے لئے مختلف شعبوں میں نوڈل افسران کی تقرریاں کی گئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ اے ایم یو میں توانائی کے تحفظ میں سبھی کو دلچسپی لیتے ہوئے جائے عمل اور رہائش گاہوں پر بجلی کا عام وسائل کے ساتھ استعمال کرنا چاہئے۔

پروفیسر منصور نے کہا کہ اگر یونیورسٹی میں بجلی بل کم ہوجاتے ہیں تو باقی رقم کو دیگر اہم کاموں میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سبھی پرانے پنکھوں اور ایئر کنڈیشنروں کو بدلا جائے گا اور بجلی کی کم کھپت کرنے والے آلات نصب کئے جائیں گے۔اس کے ساتھ ہی یونیورسٹی کے مختلف دفاتر، شعبوں اور اقامتی ہالوں میں توانائی کے تحفظ کے لئے بیداری مہم چلائی جائے گی۔ انجینئرنگ فیکلٹی کے ڈین پروفیسر محمد ادریس نے توانائی کے تحفظ پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ توانائی کے تحفظ کے ہدف کو بجلی کے مناسب اور ضروری استعمال سے حاصل کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ توانائی کے تحفظ سے ماحولیات کے معیار میں اضافہ کے ساتھ مالی بچت کا ہدف بھی حاصل کیا جاسکتا ہے۔

اے ایم یو کو گرین کیمپس کے طور پر فروغ دینے کیلئے تحفظ  توانائی پر توجہ ترجیحات میں شامل : طارق منصور

علی گڑھ مسلم یونیورسیٹی: فائل فوٹو۔

الیکٹرکسٹی شعبہ کے ممبر انچارج اور گرین یونیورسٹی پروجیکٹ کے کنوینر ڈاکٹر محمد ریحان نے کہا کہ توانائی کی کھپت کے تحفظ کو اجاگر کرنے کے لئے ہر سال قومی توانائی تحفظ یوم کا انعقاد کیا جاتا ہے۔انہوں نے یونیورسٹی میں بجلی کے استعمال اور تحفظ پر ایک پرزنٹیشن بھی دیا۔ جس میں انہوں نے توانائی کی بچت کے لئے یونیورسٹی کے ذریعہ اپنائے جارہے مختلف طریقوں کو پیش کیا، اس موقع پر الیکٹرکسٹی شعبہ کے اسسٹنٹ ممبر انچارج ڈاکٹر محمد اجمل کفیل بھی موجود تھے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز