مرکزاور ریاستی حکومت کے کئی فیصلوں کی وجہ سے چھوٹے کاروباریوں کی ٹوٹی کمر

انیس انصاری کے مطابق جانوروں کی خرید وفروخت پر پابندی سے جی ایس ٹی کے نفاذ تک ایسے کئی فیصلے ہوئے ہیں جن سے غریب مزدوروں، چھوٹے کاروباریوں کی کمر ہی ٹوٹ گئی ہے۔

Aug 01, 2017 06:14 PM IST | Updated on: Aug 01, 2017 06:14 PM IST

لکھنؤ۔ مرکزی اور ریاستی حکومت کے کچھ فیصلوں سےغریب طبقے کے لوگوں کو بڑا نقصان ہوا ہے۔ ان خیالات کا اظہار معروف دانشور و سابق آئی اے ایس انیس انصاری نے لکھنؤ میں کیا ۔ انیس انصاری کے مطابق جانوروں کی خرید وفروخت پر پابندی سے جی ایس ٹی کے نفاذ تک ایسے کئی فیصلے ہوئے ہیں جن سے غریب مزدوروں، چھوٹے کاروباریوں کی کمر ہی ٹوٹ گئی ہے۔معروف سماجی تنظیموں  کورڈ اور آنچل کے ذریعے کئے گئے سروے کے مطابق حکومت نے ابھی تک ایسے اقدامات نہیں کئے ہیں جن سے غریب و بے روزگار طبقے کو راحت مل سکے۔ عدلیہ کے احکامات کے باوجود بھی جانوروں کی خرید وفروخت اور گوشت پر پابندی جیسے معاملوں نے ایک بڑے طبقے کو بری طرح متاثر کیا ہے ۔

آزادی کے بعد ایسا پہلی بار ہو رہا ہے جب کپڑے کو بھی ٹیکس سے مبرا نہیں کیا گیا ہے۔ سنجیدہ غوروخوض کرنے اور تجزیاتی نتائج دیکھنے کے بعد تو یہی محسوس ہوتا ہے کہ جی ایس ٹی کا سب سے برا اور بڑا اثر ان کاریگروں اوردستکاروں پر پڑا ہے جو دو وقت کی روٹی کے لئے شب وروز محنت کرتے ہیں لیکن اب حالات یہ ہیں کہ روٹی کے ہی لالے پڑ گئے ہیں۔ انیس انصاری کے مطابق اس صورت حال پر غور وخوض کرنے اور اسے  بہتری کے لئے تبدیل کرنے کی ضرورت ہے ۔ اگر قدیم دستکاری اور اہم دستکاروں کو نہیں بچایا گیا تو حالات مزید تشویش ناک ہوجائیں گے۔

مرکزاور ریاستی حکومت کے کئی فیصلوں کی وجہ سے چھوٹے کاروباریوں کی ٹوٹی کمر

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز