another report against modi government over rafale issue na رافیل ڈیل سے ٹھیک پہلے حکومت نے ہٹا لی تھی بدعنوانی مخالف شق: رپورٹ– News18 Urdu

رافیل سودا سے ٹھیک پہلے حکومت نے ہٹا لی تھی بدعنوانی مخالف شق: رپورٹ

اس سے قبل اسی اخبار نے وزارت دفاع کے بھیجے ایک نوٹ کے حوالہ سے کہا تھا کہ رافیل ڈیل کو لے کر بات چیت میں وزیراعظم کا دفتر دخل دے رہا تھا اور اس پر وزارت دفاع کے افسران نے اعتراض جتایا تھا۔

Feb 11, 2019 11:32 AM IST | Updated on: Feb 11, 2019 11:34 AM IST

فرانس کے ساتھ 36 رافیل جیٹ کی خریداری کے سودے سے چند دن قبل مرکزی حکومت نے ایسکرو اکاؤنٹ کے ذریعے ادائیگی کو لے کر مالی مشیروں کی سفارش کے ساتھ ہی بدعنوانی کے معاملہ میں جرمانہ لگانے جیسے سخت التزام ہٹا لئے تھے۔ انگریزی اخبار 'دی ہندو' نے اپنی تازہ رپورٹ میں یہ جانکاری دی ہے۔

اس سے قبل اسی اخبار نے وزارت دفاع کے بھیجے ایک نوٹ کے حوالہ سے کہا تھا کہ رافیل ڈیل کو لے کر بات چیت میں وزیراعظم کا دفتر دخل دے رہا تھا اور اس پر وزارت دفاع کے افسران نے اعتراض جتایا تھا۔

رافیل سودا سے ٹھیک پہلے حکومت نے ہٹا لی تھی بدعنوانی مخالف شق: رپورٹ

رافیل جیٹ کی فائل فوٹو

Loading...

اخبار نے اپنی رپورٹ میں شائع کیا ہے کہ 58000 کروڑ روپے کے رافیل جنگی طیارہ کے سودے پر دستخط کئے جانے سے قبل اعلی سطحی سیاسی مداخلت کے بعد ڈفینس پروکیورمنٹ پروسیجر (ڈی پی پی ) کی شق ’’غیر ضروری اثر ڈالنا، ایجنٹس یا ایجنسی کمیشن اور دسالٹ ایویشن اور ایم بی ڈی اے فرانس کی کمپنیوں کے اکاؤنٹ تک رسائی جیسی شقوں کو ہندوستانی حکومت نے پروٹوکولس کے تبادلہ میں ہٹا دیا تھا۔

واضح رہے کہ اس سودے میں دسالٹ ایویشن رافیل جہاز پیکیج کی سپلائی کرنے والی کمپنی ہے اور ایم بی ڈی اے فرانس ہتھیار سپلائی کرنے والی کمپنی ہے ۔ یہ فیصلہ ڈیفنس ایکویزیشن کاؤنسل (ڈی اے سی) کی میٹنگ میں ہوا تھا جس کی صدارت اس وقت کے وزیر دفاع منوہر پاریکر نے کی تھی اور یہ میٹنگ 2016  میں ستمبر میں ہوئی تھی۔ یہ میٹنگ کابینہ کمیٹی برائے سلامتی (سی سی ایس) کی 24 اگست 2016 کی میٹنگ کے بعد ہوئی تھی جس میں اس کو منظوری دے دی گئی تھی اور اس میٹنگ کی صدارت وزیر اعظم نریندر مودی نے کی تھی۔

اس رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ اس سودے پر بات چیت کرنے والی ٹیم کے تین ارکان ایم پی سنگھ، اے آر سولے اور راجیو ورما نے ان شقوں کے ہٹائے جانے کی سخت مخالفت کی تھی لیکن ان کی مخا لفت کو نظر انداز کر دیا گیا تھا۔

Loading...