دہشت گردوں کے سرغناؤں کو سمجھنا چاہیے کہ 29 سالوں میں تشدد سے کچھ حاصل نہیں ہوا : عمر عبد اللہ

Sep 15, 2017 12:41 PM IST | Updated on: Sep 15, 2017 01:09 PM IST

سرینگر: نیشنل کانفرنس کے ایگزیکٹوچیئرمین عمر عبداللہ نے دہشت گردوں کے سرغناؤں کو ہتھیار اٹھانے کی مجبوری کو محسوس کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ جموں و کشمیر میں گزشتہ 29 سالوں کے دوران تشدد سے کچھ بھی حاصل نہیں ہوا۔ مسٹر عبداللہ آئی جی منیر احمد خان کے اس بیان پر تبصرہ کر رہے تھے جس میں انہوں نے کہا تھا دہشت گردوں کے سرغناؤں کو ختم کرنا ہی ہوگا کیونکہ وہ ریاست کے بچوں کو گمراہ کر رہے ہیں اور انہیں لالچ دے کر تشدد کی راہ پر لے جا رہے ہیں۔

سابق وزیر اعلی نے ٹویٹر پر کہا کہ ایک دفعہ دہشت گردوں کے سرغناؤں کو یہ سمجھنا چاہیے کہ مسلح تشدد مکمل طور پر بے معنی ہے۔ جموں و کشمیر کو29 سالوں کے دوران تشدد کچھ بھی حاصل نہیں ہوا ۔ غور طلب ہے کہ سیکورٹی فورسز نے اس سال جولائی میں امرناتھ یاتریوں پر حملہ کرنے والی دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کے

دہشت گردوں کے سرغناؤں کو سمجھنا چاہیے کہ 29 سالوں میں تشدد سے کچھ  حاصل نہیں ہوا : عمر عبد اللہ

عمر عبداللہ : فائل فوٹو

سربراہ ابو اسماعیل اور اس کے معاون ابو قاسم کو کل تصادم میں مار گرایا۔ دونوں دہشت گرد پاکستان کے رہنے والے تھے۔ امرناتھ یاتریوں کے بس پر حملے میں 8 یاتری ہلاک اور20 دیگر زخمی ہوئے تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز