جی ایس ٹی: كمپوزیشن اسکیم کی حد ایک کروڑ، برآمدکنندگان کو رقوم کی واپسی جلد

Oct 06, 2017 09:40 PM IST | Updated on: Oct 06, 2017 09:40 PM IST

نئی دہلی۔ حکومت نے اشیا اور سروس ٹیکس (جی ایس ٹی) نظام کے تحت تاجروں کو بڑی راحت دیتے ہوئے كمپوزیشن اسکیم کی حد 75 لاکھ روپے سے بڑھا کر ایک کروڑ روپے کر دی ہے۔ ساتھ ہی برآمدکنندگان نقد رقم کی کمی سے نجات دلانے کے لئے انہیں فوری طور پر رقم واپسی کے عمل کو شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے آج یہاں جی ایس ٹی کونسل کے اجلاس کے بعد صحافیوں کو بتایا کہ اب سالانہ ایک کروڑ روپے تک کا کاروبار کرنے والے تاجر كمپوزیشن اسکیم کے تحت رجسٹریشن کرا سکیں گے۔ پہلے یہ حد 75 لاکھ روپے تھی۔ اس اسکیم کے تحت، ٹیکس دہندگان کو اپنے کاروبار کا حساب خود کرکے ایک سے پانچ فیصد ٹیکس ادا کرنا پڑتا ہے۔ ساتھ ہی انہیں ماہانہ کے بجائے سہ ماہی رٹرن بھرنا ہوتا ہے ۔

اس کے علاوہ 1.5 کروڑ روپیہ تک سالانہ کاروبار کرنے والوں کو بھی ماہانہ کی بجائے سہ ماہی رٹرن بھرنا ہوگا ۔ ان دونوں فیصلوں سے 90 فیصد سے زائد ٹیکس دہندگان مستفید ہوں گے ۔ جی ایس ایس کے تحت برآمد کنندگان کے لئے ریفنڈ کا نظام تیار نہ ہونے سے ان کے سامنے نقدی کا مسئلہ پیدا ہوگیا ۔

جی ایس ٹی: كمپوزیشن اسکیم کی حد ایک کروڑ، برآمدکنندگان کو رقوم کی واپسی جلد

وزیر خزانہ ارون جیٹلی

مسٹر جیٹلی نے کہا کہ رقم کی واپسی کا عمل شروع کرنے کے لئے ریاستوں اور مرکزی حکام کو اختیار دیا گیا ہے۔ اس سال کے لئے 10 اکتوبر سے جولائی کی اور 18 اکتوبر سے اگست کی رقم واپسی شروع ہوگی اور برآمد کنندہ کو جلد از جلد رقم کی واپسی کا چیک دیا جائے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز