محض 20 فیصد جن دھن اکاؤنٹس میں رقم جمع نہیں ہے : ارون جیٹلی

Sep 13, 2017 01:26 PM IST | Updated on: Sep 13, 2017 01:26 PM IST

نئی دہلی۔ وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے آج کہا کہ وزیر اعظم جن دھن یوجنا کے تحت اب تک 30 کروڑ اکاؤنٹ کھل چکے ہیں اور ان میں سے صرف 20 فیصد ایسے اکاؤنٹ ہیں جن میں رقم جمع نہیں ہوئی ہے۔ مسٹر جیٹلی نے اقوام متحدہ کے زیر اہتمام یہاں مالیاتی امور سے متعلق کانفرنس کا آغاز کرتے ہوئے کہا کہ تین سال قبل جب یہ اسکیم شروع ہوئی تھی تب 77 فیصد ایسے اکاؤنٹ تھے جن میں رقم جمع نہیں ہوئی تھی لیکن اب ایسے اکاؤنٹس کی تعداد گھٹ کر 20 فیصد رہ گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ان اکاؤنٹس کو صرف کھولنا کافی نہیں ہے، بلکہ اس میں لین دین کرنا بھی ضروری ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس کے پیش نظر مرکز اور ریاستی حکومتوں کے متعدد منصوبوں کے فوائد براہ راست مستفدین کے جن دھن اکاؤنٹ میں جمع کرائے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جن دھن اکاؤنٹس کو چلانے کے لئے جامع پہل شروع کرنا ضروری ہے۔ انہوں نے سرکاری وسائل کوضررت مندوں کے لئے ہدف بنانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ گزشتہ تین سالوں میں ایسے ایشوز سنٹر پوائنٹ میں لائے گئے ہیں جنہیں پہلے مسئلہ سمجھا ہی نہیں جاتا تھا۔

محض 20 فیصد جن دھن اکاؤنٹس میں رقم جمع نہیں ہے : ارون جیٹلی

وزیر خزانہ نے پراعتماد لہجے میں کہا کہ آدھار قانون آئینی جانچ میں کامیاب ہو گا۔

وزیر خزانہ نے پراعتماد لہجے میں کہا کہ آدھار قانون آئینی جانچ میں کامیاب ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ جب آدھار لایا گیا تھا تو اس کی پوری صلاحیت کا استعمال نہیں کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ اب اس کی صلاحیت کو تسلیم کیا جا رہا ہے اور یہ ملک کے لئے بہت اہم ہے۔ مسٹر جیٹلی نے کہا کہ نوٹ بندي سے غیر رسمی معیشت رسمی بن گئی ہے اور اس سے نہ صرف بنیادی کام کرنے میں مدد ملی ہے بلکہ نقد لین دین میں بھی کمی آئی ہے۔ نوٹ بندي کے بعد ڈیجیٹل لین دین کو فروغ ملا ہے جس کا اثر اب نظر آنے لگا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز