لیفٹیننٹ گورنر پر بھڑکے کیجریوال، کہا "میں وزیراعلی ہوں، کوئی دہشت گرد نہیں

Oct 05, 2017 01:29 PM IST | Updated on: Oct 05, 2017 01:29 PM IST

نئی دہلی۔ دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے ایک بار پھر لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل پر حملہ بولا ہے۔ دہلی گیسٹ ٹیچرس کو مستقل کرانے کے فیصلے پر لیفٹیننٹ گورنر کے اعتراض جتائے جانے پر کیجریوال نے کہا، "ہمارے ساتھ ایسا سلوک کیوں کیا جاتا ہے۔ میں ایک منتخب وزیراعلی ہوں، کوئی دہشت گرد نہیں۔

کیجریوال نے لیفٹیننٹ گورنر پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا، "حکام کے پیچھے رہ کر حملہ کرنا بند کریں۔ مرد کے بچے ہیں، تو سامنے آکر سیاست کریں۔" کیجریوال نے یہ باتیں دہلی اسمبلی میں بدھ کے روز کہیں۔ چار گھنٹے کی بحث کے بعد گیسٹ ٹیچرس کو مستقل کرنے کا بل دہلی اسمبلی میں پاس کر دیا گیا۔

لیفٹیننٹ گورنر پر بھڑکے کیجریوال، کہا

بدھ کو دہلی اسمبلی میں کیجریوال کافی تلملائے نظر آئے۔ انہوں نے کہا، "دہلی نے کوئی لاء سکریٹری نہیں چنا ہے، بلکہ وزیر اعلی منتخب کیا ہے۔

بدھ کو دہلی اسمبلی میں کیجریوال کافی تلملائے نظر آئے۔ انہوں نے کہا، "دہلی نے کوئی لاء سکریٹری نہیں چنا ہے، بلکہ وزیر اعلی منتخب کیا ہے۔ میں سی ایم ہوں۔ لیفٹیننٹ گورنر کہتے ہیں کہ نائب وزیر اعلی اور وزیر اعلی کو فائل نہیں دکھائی جائے گی۔ ایسا کیا ہے ان فائلوں میں؟ لیفٹیننٹ گورنر کو کیا ہم دہشت گرد نظر آتے ہیں؟ "

گیسٹ ٹیچرس کے بارے میں اروند کیجریوال نے کہا کہ یہ مسئلہ کافی اہم ہے۔ ہمیں اساتذہ کا احترام اور انہیں تحفظ دینا چاہئے۔ ان کی ترقی کی راہ میں رکاوٹ نہیں بننا چاہئے۔ اس مسئلے پر سیاست نہیں ہونی چاہئے۔ کیجریوال نے کہا کہ اگر عام آدمی پارٹی اور بی جے پی ایک ہو جائے، تو یہ فیصلہ ایک ہفتے میں لاگو ہو جائے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز