اترپردیش میں خواتین کو پریشر ککر کی نہیں سیکورٹی کی ضرورت ہے: اسد الدین اویسی– News18 Urdu

اترپردیش میں خواتین کو پریشر ککر کی نہیں سیکورٹی کی ضرورت ہے: اسد الدین اویسی

بدایوں۔ آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے ایم اے ایم) کے صدر اسد الدین اویسی نے الزام لگایا ہے کہ اتر پردیش میں لا اینڈ آرڈر مکمل طور سے ختم ہوچکا ہے، خواتین کو پریشر ککر کی نہیں بلکہ تحفظ کی ضرورت ہے۔

Feb 12, 2017 09:20 AM IST | Updated on: Feb 12, 2017 09:20 AM IST

بدایوں۔  آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے ایم اے ایم) کے صدر اسد الدین اویسی نے الزام لگایا ہے کہ اتر پردیش میں لا اینڈ آرڈر مکمل طور سے ختم ہوچکا ہے، خواتین کو پریشر ککر کی نہیں بلکہ تحفظ کی ضرورت ہے۔ مسٹر اویسی نے کہا کہ ریاست میں قانون و انتظام مکمل طور پرچوپٹ ہے۔ وزیر اعلی اکھلیش یادو نے سماجوادی پارٹی (ایس پی) کے منشور میں خواتین کو پریشر ککر دینے کا وعدہ کیا ہے لیکن صوبے میں انہیں تحفظ دیے جانے کی ضرورت ہے۔

اے ایم اے ایم کے صدر نے کل بدایوں سیٹ سے پارٹی امیدوار خالد پرویز کی حمایت میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت کے نوٹ بندي کے فیصلے سے غریب، کسان اور مزدور پریشان ہیں۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اترپردیش میں ہی سلاٹر ہاؤس بند کرنے کی بات کیوں کرتی ہے، اسے پورے ملک میں نافذ کرکے دکھائیں۔ سلاٹر ہاؤس بند ہو جانے سے ملک کا تیس ہزار کروڑ روپے کا نقصان ہوگا۔ مسٹر اویسی نے اکھلیش یادو پر چٹکی لیتے ہوئے کہا کہ "وہ سوتے وقت بھی کہتے ہوں گے کہ کام بولتا ہے۔‘‘ سماج وادی پارٹی میں لوہیا اور سوشلزم کی کوئی بات نہیں ہے۔ ایس پی مجرموں کو ہی ٹکٹ دیتی ہے۔ اکھلیش حکومت میں عصمت دری کے واقعات میں 200 فیصد کا اضافہ ہوا۔

اترپردیش میں خواتین کو پریشر ککر کی نہیں سیکورٹی کی ضرورت ہے: اسد الدین اویسی

فائل فوٹو

Loading...