جسٹس کھیہر بنے ہندوستان کے نئے چیف جسٹس، صدر جمہوریہ نے راشٹرپتی بھون میں دلایا حلف

Jan 04, 2017 11:05 AM IST | Updated on: Jan 04, 2017 11:42 AM IST

نئی دہلی۔ جسٹس جے ایس کھیہر نے آج سپریم کورٹ کے 44 ویں چیف جسٹس کے عہدے کا حلف لیا۔ صدر پرنب مکھرجی نے یہاں صدارتی محل میں ایک باوقار تقریب میں جسٹس کھیہر کو ملک کے چیف جسٹس کے عہدے کا حلف دلایا۔ اس موقع پر نائب صدر حامد انصاری، وزیر اعظم نریندر مودی، مرکزی کابینہ کے کئی رکن، سپریم کورٹ کے جج اور کئی اہم شخصیات موجود تھیں۔

صدر نے 19 دسمبر کو کھیہر کو سپریم کورٹ کا 44 واں چیف جسٹس مقرر کیا تھا۔ جسٹس جگدیش سنگھ کھیہر نینی تال ہائی کورٹ کے چیف جسٹس رہ چکے ہیں۔28 اگست 1952 کو پیدا ہوئے جسٹس کھیہر نے گورنمنٹ کالج چندی گڑھ سے 1974 میں گریجویشن کیا۔ 1977 میں پنجاب وچندی گڑھ سے لاء کی ڈگری حاصل کی۔ 1979 میں ایل ایل ایم میں گولڈ میڈل حاصل کیا۔ 1979 میں ہی پنجاب ہریانہ ہائی کورٹ چندی گڑھ میں پریکٹس شروع کی۔ 1992 میں پنجاب ہریانہ ہائی کورٹ میں ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل بنے۔ 17 نومبر 2009  کو نینی تال ہائی کورٹ کے چیف جسٹس مقرر ہوئے اور 29 نومبر کو چیف جسٹس کے عہدے کا حلف اٹھا لیا۔ 8 اگست 2010 کو انہیں کرناٹک ہائی کورٹ کا چیف جسٹس مقرر کیا گیا۔

جسٹس کھیہر بنے ہندوستان کے نئے چیف جسٹس، صدر جمہوریہ نے راشٹرپتی بھون میں دلایا حلف

جسٹس کھیہر  نے جسٹس ٹی ایس ٹھاکر کی جگہ لی ہے جو اس عہدے پر ایک سال کی مدت کے بعد کل ریٹائر ہوئے ہیں۔ جسٹس کھیہر  تقریباً ساڑھے آٹھ ماہ تک اس عہدے پر کام کرنے کے بعد اسی سال 27 اگست کو ریٹائر ہوں گے۔ اس عہدے پر ان کی تقرری کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا گیا تھا لیکن عدالت نے کل ہی اس سلسلے میں داخل ایک درخواست کو مسترد کر دیا تھا۔ اس سے پہلے بھی عدالت نے ایسی دو درخواستوں کو مسترد کیا تھا۔ اس نے 30 دسمبر کو وکلاء کے ایک گروپ کی درخواست کو یہ کہتے ہوئے مسترد کر دیا تھا کہ جسٹس کھیہر  کو سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کے عہدے کے لئے نااہل ماننے کی کوئی وجہ نہیں ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز