بابری مسجد انہدام کیس : اڈوانی ، جوشی اور اوما بھارتی کے خلاف سماعت ایک دن کیلئے مؤخر

Mar 22, 2017 05:12 PM IST | Updated on: Mar 22, 2017 05:13 PM IST

نئی دہلی : سپریم کورٹ نے اجودھیا میں بابری مسجد کے متنازعہ ڈھانچے کو منہدم کرنے کے معاملے میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے سینئر لیڈر لال کرشن اڈوانی، مرلی منوہر جوشی اور اوما بھارتی کے خلاف سماعت ایک دن کے لئے آج مؤخر کردی۔

عدالت کو آج اس معاملے میں حکم سنانا تھا کہ کیا متنازعہ ڈھانچہ منہدم کئے جانے کے معاملے میں مسٹر اڈوانی سمیت بی جے پی کے دیگر لیڈروں پر مجرمانہ سازش رچنے کا مقدمہ دوبارہ چلایا جا سکتا ہے یا نہیں؟ تاہم، سپریم کورٹ کی سماعت کرنے والی بنچ کے ایک جج کے موجود نہ ہونے کی وجہ سے کیس کی سماعت کل تک کے لئے ملتوی کرنی پڑی۔

بابری مسجد انہدام کیس : اڈوانی ، جوشی اور اوما بھارتی کے خلاف سماعت ایک دن کیلئے مؤخر

اس سے پہلے الہ آباد ہائی کورٹ نے 20 مئی 2010 کو ان لیڈروں کے خلاف بابری مسجد کومنہدم کرنے کے لئے مجرمانہ سازش رچنے کے الزام کو مسترد کر دیا تھا۔ اس وقت ہائی کورٹ نے خصوصی عدالت کے فیصلے کو برقرار رکھا تھا۔بعد میں اس حکم کے خلاف مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) نے سپریم کورٹ میں پٹیشن دائر کی تھی اور اس فیصلے کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز