پستول لہرا كر بجرنگ دل نے دی وارننگ، امرناتھ کا بدلہ لو نہیں تو قانون اپنے ہاتھ میں لے لیں گے

Jul 13, 2017 01:12 PM IST | Updated on: Jul 13, 2017 01:12 PM IST

آگرہ۔ آگرہ میں بجرنگ دل اور وشو ہندو پریشد (وی ایچ پی) کے کارکنوں نے امرناتھ یاتریوں پر ہوئے دہشت گردانہ حملے کی مخالفت میں مظاہرہ کیا اور مرکزی حکومت کو الٹی میٹم دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر 15 دن میں اس حملے کا بدلہ نہیں لیا گیا تو وہ خود عقیدت مندوں کی حفاظت کے لئے قانون اپنے ہاتھ میں لے لیں گے۔ بجرنگ دل کے لیڈر گووند پراشر نے ہاتھ میں پستول لہراتے ہوئے کہا، "ہم حکومت ہند کو بتا دینا چاہتے ہیں کہ اگر 15 دن کے اندر امرناتھ دہشت گردانہ حملے کا بدلہ نہیں لیا گیا تو ہم لوگ عقیدت مندوں کی حفاظت کے لئے قانون اپنے ہاتھ میں لے لیں گے۔ "

پراشر نے کہا کہ یہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ یاتریوں کی حفاظت کرے۔ اگر وہ قابل نہیں ہے تو ہم خود ان کی حفاظت کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ آگرہ سے نوجوان سرینگر جائے گا اور ان کی حفاظت کرے گا۔ اس سے پہلے بجرنگ دل اور وشو ہندو پریشد کے کارکنوں نے ہاتھوں میں پستول، رائفل اور تلوار لے کر مظاہرہ کیا۔ بتا دیں گووند پراشر وہی ہے جس نے جموں اور کشمیر کے سابق وزیر اعلی فاروق عبداللہ کے سر پر ایک لاکھ کے انعام کا اعلان کیا تھا۔

پستول لہرا كر بجرنگ دل نے دی وارننگ، امرناتھ کا بدلہ لو نہیں تو قانون اپنے ہاتھ میں لے لیں گے

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز