ملک کے سرکاری بینکوں میں آج ہڑتال، نجی بینکوں میں جاری رہے گا کام

Feb 28, 2017 08:44 AM IST | Updated on: Feb 28, 2017 08:44 AM IST

نئی دہلی۔ نو بینکوں کی ملازمین تنظیموں نے حکومت کے بینکاری نظام میں بہتری کے اقدامات کو عوام مخالف قرار دیتے ہوئے مخالفت میں آج ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔ بینک ملازمین کا مطالبہ ہے کہ نوٹ بندی کی وجہ سے کرائے گئے اضافی کام کا معاوضہ دیا جائے اور قرض نہیں چكانےوالے بڑے قرضداروں پر کارروائی کی جائے۔

یونائٹیڈ فورم آف بینک يونيس (يوایف بی یو) کے بینر تلے جو نو یونین متحد ہیں، ان کے نام ہیں- اےآئی بی ای اے، اے آئی بی او سی، این سی بی ای، اے آئی بی او اے، بی ای ایف آئی، آئی این بی ایف ایف، آئی این بی او سی، این او بی ڈبلیو اور این او بی او۔ تاہم این او بی ڈبلیو اور این او بی او کا کہنا ہے کہ وہ اس ہڑتال میں شامل نہیں ہیں۔

ملک کے سرکاری بینکوں میں آج ہڑتال، نجی بینکوں میں جاری رہے گا کام

آل انڈیا بینک امپلائزایسوسی ایشن کے جنرل سکریٹری سی ایچ وینکٹ چلم نے بتایا ہے کہ بھارتی بینکاری صنعت کو اصلی خطرہ ڈوبے ہوئے بڑے قرض اور جان بوجھ کر قرض نہیں چكانےوالوں سے ہے۔ برے قرض کے لئے جواب دہی طے کرنا، جان بوجھ کر قرض نہیں چكانےوالے قرضداروں اور انہیں قرض مہیا كرانےوالے بینک حکام کے خلاف کارروائی کرنا وقت کی ضرورت ہے، نہ کہ بیڈ بینک کا قیام کرنا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز