دہلی خواتین کانگریس صدر برکھا سنگھ نے دیا استعفی ، اجے ماکن پر لگایا سنگین الزام

Apr 20, 2017 09:50 PM IST | Updated on: Apr 20, 2017 09:50 PM IST

نئی دہلی: دہلی پردیش خواتین کانگریس صدر برکھا شکلا سنگھ نے پارٹی کے ریاستی صدر اجے ماکن پر بدتمیزی کرنے کا الزام لگاتے ہوئے آج دوپہراپنے عہدے سے استعفی دینے کا اعلان کیا لیکن شام کو آل انڈیا وومین کانگریس کی جانب سے کہا گیا کہ انہیں عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔ محترمہ سنگھ نے پریس کانفرنس میں الزام لگایا کہ ان کے ساتھ ایک سال پہلے بدتمیزی کی گئی تھی۔ ان کا الزام تھا کہ مسٹر ماکن نے ان کے ساتھ زیادتی کی اور انہوں نے اس کی شکایت کی، لیکن اس پر کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ وہ دہلی پردیش خواتین کانگریس صدر کے عہدے سے استعفی دے رہی ہیں لیکن کانگریس نہیں چھوڑیں گی۔ بعد میں آل انڈیا وومین کانگریس صدر شوبھا اوجھا نے ایک پریس ریلیز جاری کرکے کہا کہ محترمہ سنگھ کو دہلی پردیش خواتین کانگریس صدر کےعہدے سے فوری اثر سے ہٹا دیا گیا ہے، لیکن انہوں نے اس کی کوئی وجہ نہیں بتائی۔

دہلی خواتین کمیشن کی سابق صدر رہیں محترمہ سنگھ نے کہا کہ کانگریس کے قول اور فعل میں اب بہت فرق آگیاہے۔ ایک سال سے وہ کانگریس نائب صدر راہل گاندھی سے ملنے کی کوشش کر رہی ہیں لیکن آج تک ملاقات کا وقت نہیں مل پایا۔ کانگریس کو مختلف نظریات کی پارٹی بتاتے ہوئے محترمہ سنگھ نے کہا کہ لیکن وہ کانگریس نہیں چھوڑیں گی۔ کانگریس قیادت کمزور ہے، اس بات کو پارٹی کا ہر چھوٹا بڑا لیڈر کہتا ہے پر کسی کی سامنے آکر بولنے کی ہمت نہیں ہے۔ غور طلب ہے کہ دہلی کانگریس کے قدآور لیڈر اور شیلا حکومت میں وزیر رہے اروندر سنگھ لولی نے بھی منگل کو کانگریس قیادت پر میونسپل انتخابات میں ٹکٹوں کی فروخت کا الزام لگاتے ہوئے پارٹی سے استعفی دے دیا تھا اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) میں شامل ہو گئے تھے۔

دہلی خواتین کانگریس صدر برکھا سنگھ نے دیا استعفی ، اجے ماکن پر لگایا سنگین الزام

محترمہ سنگھ نے الزام لگایا کہ دہلی میونسپل کارپوریشن انتخابات کیلئے خواتین کو اچھی تعداد میں ٹکٹ نہیں دیئے گئے۔ اس کی شکایت مسٹر گاندھی سے بھی کی گئی تھی لیکن ان کی بات نہیں سنی گئی۔ انہوں نے کہا، "بہت افسردہ ہوکر مجھے یہ کہنا پڑ رہا ہے کہ مسٹر گاندھی اور مسٹر ماکن کی قیادت میں خواتین کے حقوق اور تحفظ کے مسئلے پر صرف ووٹ حاصل کرنے کے لئے بات کی جاتی ہے۔ مسٹر ماکن نے نہ صرف میرے ساتھ زیادتی کی بلکہ خواتین کانگریس کی متعدد عہدیداروں کے ساتھ بھی ایسا برتاؤ کیا۔ یہ بات جب مسٹر گاندھی کے نوٹس میں لائی گئی تو اس کو نظر انداز کر دیا گیا۔ "

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز