بھارتیہ مزدور سنگھ نے عام بجٹ کو بتایا مایوس کن ، زوردار مخالفت کی وارنگ

Feb 01, 2017 10:41 PM IST | Updated on: Feb 01, 2017 10:43 PM IST

نئی دہلی: بی جے پی کی معاون مزدورتنظیم بھارتیہ مزدور سنگھ (بی ایم ایس) نے عام بجٹ 2017-18 کے لیے کارکنوں، تنخواہ یافتہ افراد اور غریبوں کے لئے مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس میں جس طرح کے اعلانات کئے گئے ہیں اسے حکومت حاصل نہیں کر سکتی ہے اور اس کی پرزورمخالفت کی جائے گی۔ بی ایم ایس کے جنرل سکریٹری برجیش اپادھیائے نے آج یہاں جاری ایک بیان میں کہا کہ تمام متعلقہ تنظیموں کو عام بجٹ کی مخالفت کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو نوٹ بندي سے بےروزگار ہوئے لوگوں کو معاوضہ دینے کا انتظام کرنا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ غربت کے خاتمے کے لئے ’’ٹرانس فارم ، انرجی اور کلین انڈیا‘‘ کے اعلان کردہ مقاصد میں وزیر خزانہ ارون جیٹلی کا عام بجٹ 2017-18 حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہوگا۔

بھارتیہ مزدور سنگھ نے عام بجٹ کو بتایا مایوس کن ، زوردار مخالفت کی وارنگ

انهوں نے کہا کہ نوٹ بندي کی وجہ سے حکومت کےخزانے میں کافی رقم جمع ہوئی ہے لیکن اس کے باوجود فلاحی اسکیموں پر اخراجات میں اضافہ نہیں کیا گیا ہے۔ نوٹ بندي کی وجہ سے بڑے پیمانے پر ہوئی نقل مکانی کے سلسلے میں بھی بجٹ میں کچھ نہیں کہا گیا ہے۔ تاہم منریگا کی مد میں اضافہ کیا گیا ہے لیکن بے روزگاری میں اضافے کے پیش نظر یہ کافی نہیں ہے۔ انکم ٹیکس میں دی گئی چھوٹ بھی بہت معمولی ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز