نسیم الدین صدیقی تو صرف کیشیر تھے، حقیقی سوداگر تو مایاوتی ہیں : بی جے پی

بی ایس پی کی طرف سے نسیم الدین صدیقی اور ان کے بیٹے افضل کو نکالے جانے پر بھارتیہ جنتا پارٹی نے کہا ہے کہ یہ بی ایس پی میں شکست کی وجہ گھمسان مچی ہوئی ہے

May 10, 2017 01:29 PM IST | Updated on: May 10, 2017 01:29 PM IST

لکھنو : بی ایس پی کی طرف سے نسیم الدین صدیقی اور ان کے بیٹے افضل کو نکالے جانے پر بھارتیہ جنتا پارٹی نے کہا ہے کہ یہ بی ایس پی میں شکست کی وجہ گھمسان مچی ہوئی ہے۔ بی جے پی کے ریاستی ترجمان راکیش ترپاٹھی نے کہا کہ مایوس بی ایس پی سربراہ مایاوتی ہار کی وجوہات کو تسلیم کرنے کے لئے تیار نہیں ہیں، وہ ہار کا ٹھیکرا کبھی ای وی ایم پر پھوڑتي ہیں تو کبھی نسیم الدین پر سنگین الزامات لگا کر اپنی مایوسی دور کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یوپی کے عوام نے 2014 کے لوک سبھا انتخابات میں اور 2017 اسمبلی انتخابات میں واضح طور پر بتا دیا کہ اب یہاں نسلی سیاست کی دال نہیں گلےگي۔ لیکن ایس پی اور بی ایس پی جیسی ذات پر مبنی پارٹیاں اس سچائی کو قبول نہیں کر پا رہی ہیں۔ بی ایس پی سپريمو کو یہ بھی بتانا چاہئے کہ نسیم الدین صدیقی نے انتخابات میں کس کے کہنے پر پیسے وصولے اور اس کا حصہ کہاں کہاں پہنچا؟

نسیم الدین صدیقی تو صرف کیشیر تھے، حقیقی سوداگر تو مایاوتی ہیں : بی جے پی

راکیش نے الزام لگایا کہ نسیم الدین صدیقی تو صرف 'کیشیر کا کردار ادا کر رہے تھے، دلت ووٹوں کی حقیقی 'سوداگر تو خود بی ایس پی سپریمو ہیں۔ بی ایس پی چھوڑنے والے کئی لیڈروں نے پہلے بھی یہ الزامات لگائے ہیں۔ آج پہلی مرتبہ بی ایس پی نے خود بھی اس کا اعتراف کیا ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز