سماج وادی پارٹی کا منشور کھوکھلے وعدوں کا پلندہ، عوام گمراہ نہیں ہوں گے : بی جے پی

Jan 23, 2017 08:35 AM IST | Updated on: Jan 23, 2017 08:35 AM IST

نئی دہلی۔  بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے اترپردیش اسمبلی انتخابات کے لیے سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے جاری منشور کو کھوکھلے وعدوں کی دستاویز قرار دیتے ہوئے کہا کہ عوام اس سے گمراہ ہونے والے نہیں ہیں اور بی جے پی دو تہائی سے زیادہ اکثریت سے ریاست میں حکومت بنائے گی۔ بی جے پی کے قومی جنرل سکریٹری ارون سنگھ اور پارٹی کی اترپردیش یونٹ کے صدر کیشو پرساد موریہ نے یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ عوام کے پاس وزیر اعلی اکھلیش یادو کی حکومت کے گزشتہ پانچ برس کے کام کا ہر حساب ہے۔ مسٹر یادو ریاست میں جس 'متوازن ترقی' کی بات کر رہے ہیں تو ریاست میں سماج وادی پارٹی کے حکومت میں مجرموں، زمین مافیا وں، کان کنی مافیا، غنڈوں، بدعنوانوں کی متوازن ترقی ہوئی ہے۔  موریہ نے کہا کہ  اکھلیش یادو کے دور میں غنڈہ گردی عروج پر ہے، جرائم پیشہ افراد کا ننگا ناچ ہو رہا ہے، خواتین کے خلاف جرائم بے تحاشہ بڑھ گئے ہیں اور ایسا کوئی گاؤں یا شہر نہیں بچا ہے جہاں سماج وادی پارٹی کا جھنڈا لگا کر کھیتوں / زمینوں / مکانوں پر غیر قانونی قبضے نہیں ہوئے ہیں۔ ریاست میں ترقیاتی کام ٹھپ ہیں۔ریاست کو بے روزگاری کے دلدل میں دھکیل دیا گیا ہے۔ اس ریاست کو ایس پی اور بہوجن سماج پارٹی نے جم کر لوٹا ہے۔

سماج وادی پارٹی کا منشور کھوکھلے وعدوں کا پلندہ، عوام گمراہ نہیں ہوں گے : بی جے پی

موریہ نے کہا کہ منشور میں 24 گھنٹے بجلی دینے کی بات کہی گئی ہے لیکن ان کے ہی دور حکومت میں اتر پردیش میں بجلی کا بحران بڑھ گیا اور گاووں و شہروں میں بجلی کی بھاری کٹوتی سے چھوٹی موٹی صنعت دھندھے اور کاروبار چوپٹ ہو گئے اور لوگ نقل مکانی کرنے پر مجبور ہو گئے۔ صحت کے شعبے میں پانچ سال میں مختص بجٹ کا صرف 14 فیصد ہی استعمال کیا گیا۔ منشور میں مسٹر یادو نے کسان بہبود فنڈ بنانے کی بات کی ہے لیکن وہ راحت کی رقم کی تقسیم کرنے اور وزیر اعظم فصل انشورنس اسکیم نافذ کرنے میں ناکام رہے ہیں۔ گنا کسانوں کو ادا ئیگی نہیں کی گئی۔ ان کی پیداوار نہیں خریدی گئی۔ ان باتوں کا کون جواب دے گا۔ موریہ نے کہا کہ میٹرو اور ایکسپریس وے کی بات بھی کی گئی ہے لیکن اس کا مزہ سیفئی کنبہ نے ہی لیا ہے۔ مسٹر یادو کو اشتہارات سنگ بنیاد اور مجرموں کے سرپرست وزیر اعلی کے طور پر جانا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ سماج وادی پارٹی کا گراف گر رہا ہے۔ بی ایس پی 2012 کی پوزیشن میں ہے اور کانگریس کا کوئی وجود ہی نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ حال ہی میں ایس پی میں ایک ہائی پروفائل فیملی ڈرامہ دیکھا گیا۔ چچا بھتیجا اور باپ بیٹے کی نورا کشتی الیکشن کمیشن کے فیصلے سے بے نقاب ہو گئی ہے۔ ایس پی کانگریس بی ایس پی کل بھی متحد تھے اور آج بھی متحد ہیں۔ پر بی جے پی انہیں شکست دے کر اتر پردیش میں حکومت بنائے گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز