واضح اکثریت تو بھول جائیے ، گجرات میں بی جے پی کو مطلوبہ سیٹیں بھی نہیں ملیں گی : بی جے پی ممبر پارلیمنٹ

جہاں ایک طرف زیادہ تر ایگزٹ پولس میں گجرات اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کو کامیاب ہوتےہوئے بتایا گیا ہے ، وہیں بی جے پی کے ایک ممبر پارلیمنٹ نے دعوی کیا ہے کہ بی جے پی گجرات میں انتخابات ہار رہی ہے۔

Dec 17, 2017 12:30 PM IST | Updated on: Dec 17, 2017 02:21 PM IST

نئی دہلی : جہاں ایک طرف زیادہ تر ایگزٹ پولس میں گجرات اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کو کامیاب ہوتےہوئے بتایا گیا ہے ، وہیں بی جے پی کے ایک ممبر پارلیمنٹ نے دعوی کیا ہے کہ بی جے پی گجرات میں انتخابات ہار رہی ہے۔ بی جے پی سے راجیہ سبھا ممبر سنجے کاکڑے کا کہنا ہے کہ ان کی پارٹی ریاست میں حکومت سازی کیلئے مطلوبہ سیٹیں حاصل نہیں کرپائیں گی ۔ انہوںنے دعوی کیا کہ واضح اکثریت کو بھول جائیے ، پارٹی کو حکومت بنانے کیلئے مطلوبہ سیٹیں بھی نہیں ملیں گی جبکہ کانگریس واضح اکثریت کے قریب پہنچے گی ۔ ساتھ ہی ساتھ انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگر پھر بھی پارٹی ریاست میں حکومت برقرار رکھنے میں کامیاب ہوجاتی ہے تو یہ صرف اور صرف وزیر اعظم مودی کی وجہ سے ہوگا۔

کاکڑے نے کہا کہ وہ یہ دعوی اس لئے کررہے ہیں کیوںکہ ان کی ٹیم نے گجرات میں ایک سروے کیا ہے اور ان کا دعوی اسی سروے کی بنیاد پر ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے چھ لوگوں کی ایک ٹیم گجرات بھیجی تھی ، وہ زیادہ تر دیہی علاقوں میں گئے ، جہاں ان لوگون نے کسانوں ، ڈرائیوروں اور مزدوروں سے بات چیت کی ۔ ان کے سروے کے مطابق اور میرے خود کے اندازہ سے لگتا ہے کہ بی جے پی کو گجرات میں واضح اکثریت نہیں ملے گی۔

واضح اکثریت تو بھول جائیے ، گجرات میں بی جے پی کو مطلوبہ سیٹیں بھی نہیں ملیں گی : بی جے پی ممبر پارلیمنٹ

کاکڑے نے اپنے اندازہ کیلئے بی جے پی حکومت مخالف لہر کا بھی تذکرہ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کے خلاف منفی جذبات کی بی جے پی کو قیمت چکانی پڑ سکتی ہے ۔ ساتھ ہی ساتھ انہوں نے یہ بھی کہا کہ گزشتہ کچھ ریلیوں میں پارٹی لیڈروں نے ترقی کے معاملہ پر ایک لفظ بھی نہیں کہا۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی گزشتہ 22 سال سے گجرات میں اقتدار پر قابض ہے ۔ آزادی کے بعد سے اب تک ملک میں کوئی بھی پارٹی نہیں ہے (مغربی بنگال میں کمیونسٹوں کو چھوڑ دیں تو ) جو 25 سال تک اقتدار میں رہی ہو۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز