Live Results Assembly Elections 2018

کشمیر میں امن کی بحالی ’آپریشن آل آوٹ‘ اور ’این آئی اے کاروائیوں‘ کی دین: بی جے پی

جموں۔ جموں وکشمیر کی مخلوط حکومت کی اکائی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے کہا ہے کہ جنگجوؤں کے خلاف آپریشن آل آوٹ اور علیحدگی پسندوں کے خلاف قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) کی چھاپہ مار کاروائیوں کی بدولت وادی کشمیر میں امن وامان کی فضا قائم ہورہی ہے۔

Dec 30, 2017 06:22 PM IST | Updated on: Dec 30, 2017 06:22 PM IST

جموں۔ جموں وکشمیر کی مخلوط حکومت کی اکائی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے کہا ہے کہ جنگجوؤں کے خلاف آپریشن آل آوٹ اور علیحدگی پسندوں کے خلاف قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) کی چھاپہ مار کاروائیوں کی بدولت وادی کشمیر میں امن وامان کی فضا قائم ہورہی ہے۔ پارٹی نے کسی بھی جماعت کا نام لئے بغیر کہا ہے کہ سیاسی جماعتوں کی جانب سے وادی میں حالات خراب کرنے کی بار بار کوششیں کی گئیں۔ ان باتوں کا اظہار بی جے پی کی ریاستی اکائی کے صدر ست شرما نے ہفتہ کو یہاں پارٹی کے یک روزہ اجلاس کے موقع پر نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کیا۔ مذکورہ اجلاس 15 فروری 2018 ء سے شروع ہونے والے پنچایتی انتخابات کے لئے حکمت عملی وضع کرنے کے لئے طلب کیا گیا تھا۔ اجلاس میں بی جے پی کے قومی جنرل سکریٹری (آرگنائزیشنز) رام لال ، وزیر اعظم دفتر میں وزیر مملکت ڈاکٹر جتیندر سنگھ اور ریاستی نائب وزیر اعلیٰ ڈاکٹر نرمل سنگھ بھی موجود تھے۔ ست شرما نے نامہ نگاروں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ’ ریاست میں ترقی کا مرحلہ گذشتہ تین برسوں سے جاری ہے۔

اپوزیشن کے پاس کہنے کو کچھ بھی نہیں ہے۔ وقت وقت پر کشمیر کی صورتحال کو خراب کرنے کی سیاسی جماعتوں کی جانب سے کوشش کی گئی۔ لیکن این آئی اے کی چھاپہ مار کاروائیوں ، وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ جی کی جانب سے مذاکرات کار کی نامزدگی اور آپریشن آل آوٹ کی وجہ سے (جنگجوؤں پر مسلسل پریشر ہے) جموں وکشمیر میں امن اور ترقی کی ایک اچھی فضا قائم ہورہی ہے‘۔ انہوں نے اجلاس بلانے کے مقصد پر بات کرتے ہوئے کہا ’ہم نے پنچایت انتخابات کے سلسلے پارٹی سے وابستہ تمام ممبران پارلیمنٹ، اسمبلی و کونسل اور عہدیداروں کو بلایا تھا۔ چونکہ یہ طے ہوچکا ہے کہ 15 فروری سے ریاست میں پنچایتی انتخابات کا آغاز ہوگا، اس اجلاس میں خاص طور پر اسی موضوع پر بحث ہوئی۔ وزیر اعظم چاہتے ہیں کہ نچلی سطح کے اراکین کی بات وزراء، ممبران پارلیمنٹ اور اسمبلی تک پہنچے۔

کشمیر میں امن کی بحالی ’آپریشن آل آوٹ‘ اور ’این آئی اے کاروائیوں‘ کی دین: بی جے پی

فائل فوٹو

انہوں نے کہا کہ نچلی سطح کے اراکین کو اپنی بات پہنچانے میں ہمیشہ دقتوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ میرا ماننا ہے کہ پنچایتی انتخابات نچلی سطح کے اراکین کے لئے سیڑھی کا کام کریں گے‘۔ اس دوران بی جے پی ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ رام لال کی قیادت میں منعقد ہونے والے اجلاس میں مخلوط حکومت میں شامل بی جے پی وزراء کی کارکردگی، تنظیمی معاملات اور پارٹی کی مضبوطی کے لئے اٹھائے جانے والے اقدامات پر بحث ہوئی۔ انہوں نے بتایا ’بی جے پی وزراء، ممبران پارلیمنٹ، ممبران اسمبلی و کونسل، پارٹی عہدیداروں، ضلع صدور اور دوسرے سینئر بی جے پی لیڈران نے اس یک روزہ اجلاس میں شرکت کی‘۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز