کشمیر: لال چوک پر بی جے پی یوتھ ونگ کی تاریخی ترنگا ریلی نہیں نکالی جاسکی ، 200 کارکنان حراست میں 

Aug 15, 2017 03:50 PM IST | Updated on: Aug 15, 2017 03:50 PM IST

سری نگر: جموں وکشمیر پولیس نے یوم آزادی کے موقع پر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی یوتھ ونگ یا ’یووا مورچا‘ کی گرمائی دارالحکومت سری نگر کے قلب تاریخی لال چوک میں مجوزہ ترنگا ریلی کو ناکام بناتے ہوئے پیر اور منگل کی درمیانی رات کو لال چوک کے ہوٹلوں سے کم از کم 200 بی جے پی کارکنوں کو حراست میں لیا۔ ذرائع نے بتایا کہ پولیس نے بی جے پی یوتھ ونگ کے کارکنوں کو حراست میں لیکر سیول لائنز کے متعدد پولیس تھانوں میں نظربند رکھا۔ تاہم سری نگر کے بخشی اسٹیڈیم میں یوم آزادی کی تقریب کے اختتام پذیر ہونے کے بعد حراست میں لئے گئے کارکنوں کو رہا کردیا گیا۔

ذرائع نے بتایا کہ بی جے پی یوتھ ونگ کارکنوں کو حراست میں لینے کا اقدام شہر میں امن وامان کی فضا کو برقرار رکھنے کے لئے اٹھایا گیا۔ ذرائع نے بتایا کہ حراست میں لئے گئے بی جے پی کارکنوں کی قیادت بی جے پی یووا مورچا کے قومی نائب صدر اعجاز حسین کررہے تھے۔ اس دوران جموں وکشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے بی جے پی یوتھ ونگ کارکنوں کی گرفتاری کو فکسڈ میچ قرار دیا۔

کشمیر: لال چوک پر بی جے پی یوتھ ونگ کی تاریخی ترنگا ریلی نہیں نکالی جاسکی ، 200 کارکنان حراست میں 

file photo

انہوں نے مائیکرو بلاگنگ کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ایک ٹویٹ میں کہا ’فکسڈ میچ کی ایک صحیح تعریف۔ جموں وکشمیر میں بی جے پی حکومت نے قومی ترنگا لہرانے جارہے بی جے پی عہدیداران کو حراست میں لیا‘۔ انتظامیہ نے منگل کو تاریخی لال چوک کی طرف جانے والی تمام سڑکوں کو سیل کردیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز