ویڈیو پوسٹ کرنے والا جوان تیج بہادر بولا، اب مجھے پلمبر کی ڈیوٹی پر بھیجا گیا

Jan 10, 2017 12:45 PM IST | Updated on: Jan 10, 2017 12:46 PM IST

نئی دہلی۔ بی ایس ایف جوان تیج بہادر یادو کا ویڈیو وائرل ہونے کے بعد معاملے نے طول پکڑ لیا ہے۔ جہاں بی ایس ایف نے شکایت کی تحقیقات شروع کر دی ہے وہیں تیج بہادر کا کہنا ہے کہ وہ ناانصافی کے لئے لڑتا رہے گا اور پورا ملک اس کے ساتھ ہے۔ تیج بہادر نے پی ایم نریندر مودی سے بھی معاملہ میں دخل دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ بی ایس ایف حکام کی ٹیم پونچھ کے منڈی علاقے میں تعینات 29 بٹالین بی ایس ایف کے جوان سے ملنے پہنچی۔

تیج بہادر نے نیوز 18 انڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ یہ ویڈیو پوسٹ کرنے سے پہلے انہوں نے اپنے سینئر کمانڈروں کو کھانے سے متعلق شکایت کی لیکن انہوں نے اس پر دھیان نہیں دیا جس کے بعد مجھے یہ ویڈیو پوسٹ کرنا پڑا۔ تیج بہادر نے کہا کہ ویڈیو سامنے آنے کے بعد مجھے بٹالین ہیڈ کوارٹر لایا گیا جہاں كمانڈنٹ نے مجھے پلمبر ڈیوٹی پر لگا دیا۔ لیکن کوئی بھی ڈیوٹی دی جائے ہم اس کی مخالفت نہیں کر سکتے۔ اس سے پہلے بھی میں نے پلمبر کی ڈیوٹی کی ہے۔

ویڈیو پوسٹ کرنے والا جوان تیج بہادر بولا، اب مجھے پلمبر کی ڈیوٹی پر بھیجا گیا

وہیں، بی ایس ایف نے تیج بہادر پر بھی الزام لگائے ہیں۔ ان پر الزام لگائے جا رہے ہیں کہ اپنے 20 سال کے کیریئر میں انہیں کئی بار سخت سزا بھی دی گئی ہے۔ اس پر تیج بہادر نے کہا کہ غلطیاں سب کرتے ہیں اور تمام جوانوں کو اس کی سزا بھی ملتی ہے۔ لیکن میں نے ان سزاؤں کے بعد خود کی اصلاح کی ہے۔ اپنی غلطیوں کے بعد مجھے اپنے کام کے لئے 14 ایوارڈ ملے ہیں اور میں نے ملک کے لئے اچھے کام بھی کئے ہیں۔ تیج بہادر نے کہا کہ میں چاہتا ہوں اس معاملے کی جانچ سی بی آئی یا این آئی اے کرے جس سے اس معاملے کی غیر جانبدارانہ تحقیقات ہو۔

تیج بہادر نے کہا کہ بٹالین میں میرے ساتھی جوان بھی خوش ہیں کہ میں نے یہ قدم اٹھایا اور وہ سب بھی میرے ساتھ ہیں۔ مجھے یقین ہے کہ پی ایم مودی مجھے انصاف دلوائیں گے، مجھے ان پر مکمل اعتماد ہے۔ مودی ہی کہتے ہیں سچ بولو میں تمہارا ساتھ دوں گا۔ بہت سی جگہ بی ایس ایف جوانوں کو اچھا کھانا ملتا ہے۔ یہ علاقہ حساس ہے یہاں کوئی بھی آگے بڑھ کر شکایت نہیں کرتا۔ تیج بہادر نے کہا کہ اعلی حکام کی طرف سے دباؤ بنایا گیا ہے۔ میرے كمانڈنٹ نے کہا کہ جو تم نے کیا ہے وہ غلط ہے اور تمہیں اس ویڈیو کو واپس لے لینا چاہئے لیکن میں نے ایسا کرنے سے انکار کر دیا۔

دراصل، بی ایس ایف کے جوان تیج بہادر یادو کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا میں وائرل ہو رہی ہے۔ اس ویڈیو میں انہوں نے الزام لگایا ہے کہ بی ایس ایف جوانوں کو گھٹیا کھانا دیا جا رہا ہے۔ تیج بہادر نے بی ایس ایف کے اعلی حکام پر الزام عائد کیا ہے کہ اعلی افسران راشن کو بازار میں فروخت کر دیتے ہیں۔ تیج بہادر کی اس وائرل ویڈیو کو وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے دیکھا تو انہوں نے فورا اس پر داخلہ سیکرٹری سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔ راج ناتھ نے اس معاملے میں مناسب کارروائی کرنے کو کہا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز