ذات پات سے متعلق سوچ تبدیل نہیں ہوئی تو اختیار کرلوں گی بدھ مذہب: مایاوتی

اعظم گڑھ ۔ بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی )کی صدر مایاوتی نے مرکزی اور ریاستی حکومتوں کو دلت اور اقلیت مخالف قرار دیتے ہوئے آج کہا کہ ملک کی ذات پات سے متعلق سوچ میں تبدیلی نہیں آئی تو وہ ڈاکٹر بھیم راؤامبیڈکر کی طرح بدھ مذہب اختیار کرلیں گی ۔

Oct 24, 2017 09:30 PM IST | Updated on: Oct 24, 2017 10:01 PM IST

اعظم گڑھ ۔ بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی )کی صدر مایاوتی نے مرکزی اور ریاستی حکومتوں کو دلت اور اقلیت مخالف قرار دیتے ہوئے آج کہا کہ ملک کی ذات پات سے متعلق سوچ میں تبدیلی نہیں آئی تو وہ ڈاکٹر بھیم راؤامبیڈکر کی طرح بدھ مذہب اختیار کرلیں گی ۔

محترمہ مایاوتی نے یہاں کارکنوں کے اجلاس میں کہا کہ بی جے پی حکومت کے اترپردیش میں اقتدار میں آنے کے بعد سے دلت ،پسماندہ اور اقلیتی فرقہ کے لوگوں کا زبردست استحصال ہورہا ہے اور انھیں تنگ کیا جارہا ہے ۔بی جے پی پسماندہ اقلیتی فرقہ کی دشمن ہے ۔بی جے پی نے انھیں گمراہ کیا ہے ۔

ذات پات سے متعلق سوچ تبدیل نہیں ہوئی تو اختیار کرلوں گی بدھ مذہب: مایاوتی

بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی )کی صدر مایاوتی: فائل فوٹو۔

انھوں نے کہا کہ ملک میں مذہب کے ٹھیکہ داروں نے سماجی عدم مساوات ،تفریق اور ذات پات سے متعلق اپنی تنگ ذہنیت میں تبدیلی نہیں کی تو باباصاحب ڈاکٹر بھیم راؤامبیڈکر کی طرح وہ بھی ہندومذہب چھوڑ کر بدھ مذہب اختیار کرلیں گی ۔

اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کے کاموں پر نکتہ چینی کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ یوگی کو مندروں میں پوجا پاٹھ سے فرصت نہیں ہے ۔وہ ریاست کی ترقی کیا کریں گے ۔پوروانچل سے تعلق رکھنے کے باوجود انکی اس علاقہ کی ترقی پر کوئی توجہ نہیں ہے ۔

Loading...

کارکنوں کے اجلاس میں ایک خاص بات یہ رہی کہ ہمیشہ سماج وادی پارٹی (ایس پی )کی مخالفت کرنے والی بی ایس پی صدر نے آج ایس پی کے خلاف ایک لفظ بھی نہیں کہا ۔انھوں نے اعظم گڑھ کو دلتوں ،پسماندہ اقلیتوں ،غریبوں اور مظلوموں کا پوروانچل گڑھ بتایا۔انھوں نے اعظم گڑھ کے رانی کی سرائے بلاک کے شنکر پور چیک پوسٹ پر منعقدہ تین منڈلوں کے کارکنوں کے اجلاس سے خطاب کیا ۔

تقریبا ڈیڑھ گھنٹے کی تقریر میں محترمہ مایاوتی نے صرف پسماندہ ،دلتوں ،اقلیتوں اور آدی واسیوں کی بات کی اورکہا کہ صرف بی ایس پی میں ہی ان طبقوں کا احترام ہے ۔انھوں نے منڈل کمیشن کا ذکر کرتےہوئے کہا کہ سابق وزیر اعظم وی پی سنگھ کی حکومت میں منڈل کمیشن نافذ کرانے میں اور بابا صاحب بھیم راؤ امبیڈکر کو بھارت رتن دلانےمیں بی ایس پی کا تعاون رہا ہے ۔ انھوں نے پسماندہ سماج کو یاددہائی کراتے ہوئے کہا کہ بی جے پی تو پسماندہ طبقات کی زبردست مخالف ہے ۔منڈل کمیشن نافذ ہونے کے بعد پورے ملک میں بی جے پی نے صرف اسکی زبردست مخالفت اور مظاہرے ہی نہیں کئے بلکہ وی پی سنگھ کی حکومت سے حمایت واپس لیکر حکومت ہی گرادی ۔پسماندہ طبقات کے لوگوں کو بی جے پی سے ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے ۔بی جے پی کو اس بار تین سال بعد پسماندہ طبقات کمیشن بنانے کی یاد اس لئے آئی کہ انھیں ہونے والے شہربلدیاتی اور لوک سبھا 2019کےانتخابات میں پسماندہ طبقات کے بل پر ہی انتخابات لڑنا ہے ۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز