اجتماعی عصمت دری معاملے میں ایودھیا سے بی ایس پی امیدوار بزمی صدیقی گرفتار

Mar 07, 2017 06:30 PM IST | Updated on: Mar 07, 2017 06:32 PM IST

لکھنئو۔ ایس پی لیڈر گایتری پرجاپتی کے بعد ریپ کیس میں پھنسے ایک اور سیاستداں ایودھیا سے بی ایس پی امیدوار بزمی صدیقی کو منگل کو ایودھیا پولیس نے گرفتار کر لیا ہے۔ آئی جی، ایس ٹی ایف رام كمار نے بتایا کہ معاملے میں پانچ افراد کی پہلے ہی گرفتاری ہو چکی تھی۔ اب ایک ملزم محمد سلیمان کی گرفتاری باقی ہے۔ کچھ دن پہلے ہی ایک لڑکی نے ایودھیا اسمبلی سیٹ سے بی ایس پی امیدوار بزمی صدیقی اور ان کے ساتھیوں پر گینگ ریپ کا الزام لگایا تھا۔ معاملے میں پولیس نے بزمی صدیقی سمیت 7 افراد پر گینگ ریپ کا کیس درج کیا۔

متاثرہ کا الزام ہے کہ بی ایس پی امیدوار اپنے ساتھیوں کے ساتھ آئے اور اس کے اہل خانہ سے مارپیٹ کی۔ اس دوران بی ایس پی امیدوار سمیت سبھوں نے اس کے ساتھ گینگ ریپ بھی کیا۔ اس سے پہلے بھی بی ایس پی امیدوار کے خلاف ریپ کا کیس اسی لڑکی نے درج کرایا تھا۔ تب پولیس نے ان کے ساتھیوں کو تو جیل بھیج دیا تھا لیکن صدیقی کا نام نکال دیا گیا تھا۔

اجتماعی عصمت دری معاملے میں ایودھیا سے بی ایس پی امیدوار بزمی صدیقی گرفتار

متاثرہ نے الزام لگایا ہے کہ صدیقی کے ساتھی رحمن، غفار، چاند، پپو، پرویز نے ہمیں بری طرح پیٹا۔ چھوٹے بچے کو بھی اٹھا کر پٹخ دیا۔ سب کو بے رحمی سے پیٹا۔ میرے منہ اور ناک سے خون بہنے لگا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز