تین لاکھ سے زیادہ کیش ٹرانزیکشن پر روک ، دو ہزار سے زیادہ چندے کا حساب دینا ہوگا

Feb 01, 2017 08:13 AM IST | Updated on: Feb 01, 2017 10:06 PM IST

وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے عام بجٹ 2017 پیش کرتے ہوئے کیش ٹرانزیکشن پر روک لگانے کی سمت میں اہم قدم اٹھایا ۔ تین لاکھ سے زیادہ کے کیش کے لین دین پر حکومت نے روک لگا دی ہے ۔ اس کے علاوہ حکومت نے سیاسی چندے میں شفافیت لاتے ہوئے 2000 سے زیادہ کے چندے کا حساب دینا لازمی کر دیا ہے ۔ ایک شخص زیادہ سے زیادہ 2000 روپے ہی کیش میں بطور سیاسی چندہ دے سکتا ہے ۔ اس کے علاوہ ارون جیٹلی نے تین لاکھ سے پانچ لاکھ تک کمانے والوں کو بھی راحت دینے ہوئے دس فیصد سے اب صرف پانچ فیصد ٹیکس کا اعلان کیا ہے ۔  علاوہ ازیں تین لاکھ روپے تک پر اب ٹیکس نہیں دینا پڑے گا۔

وزیر خزانہ ارون جیٹلی آج لوک سبھا میں عام بجٹ پیش کر رہے تھے ۔ انہوں نے اپنے بجٹ تقریر میں کہا کہ ان کی طرف سے تیار بجٹ کا مقصد دیہی علاقوں ، انفراسٹرکچر اور غربت کے خاتمہ کی سمت میں زیادہ رقم کا بندوبست کرنا ہے ۔

تین لاکھ سے زیادہ کیش ٹرانزیکشن پر روک ، دو ہزار سے زیادہ چندے کا حساب دینا ہوگا

وزیر خزانہ نے کہا کہ نوٹ بندی کو اقتصادی اصلاحات کی سمت میں بڑا اور جرات مندانہ قدم قرار دیا اور کہا کہ اب ہم غیر رسمی معیشت سے رسمی معیشت کی سمت میں بڑھ رہے ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت کا ہدف پانچ سال میں کسانوں کی آمدنی دوگنا کرنے کا ہے ۔ کسانوں کے قرض کے لئے دس لاکھ کروڑ کا ہدف رکھا گیا ہے ۔

جیٹلی نے کہا کہ اس بجٹ میں بے گھروں کے لیے سال 2019 تک ایک کروڑ گھر بنانے کا ہدف رکھا گیا ہے ۔ اس کے علاوہ حکومت روز 133 کلومیٹر سڑک بنا رہی ہے ۔ بجٹ میں وزیر اعظم دیہی اسکیم کے لئے 23 ہزار کروڑ روپے کا بندوبست کیا گیا ہے ۔ انہوں نے معلومات دی کہ دیہات میں حفظان صحت 42 فیصد سے بڑھ کر 60 فیصد ہوئی ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز