ڈینگو سے سات سالہ بچی ادیا سنگھ کی موت پر فورٹس اسپتال کے خلاف رپورٹ درج ، 16 لاکھ کا بنایا تھا بل

Dec 10, 2017 12:43 PM IST | Updated on: Dec 10, 2017 12:46 PM IST

چنڈي گڑھ : ہریانہ حکومت نے ڈینگی سے سات سال کی بچی کی موت کے معاملے میں گروگرام کے فورٹس اسپتال کے خلاف رپورٹ درج کرائی ہے۔ ہریانہ کے وزیر صحت انل وج نے ٹوئٹ کرکے اس کی اطلاع دی ہے۔ مسٹر وج نے اپنی ٹویٹس میں ایف آئی آر نمبر (639) بھی جاری کیا ہے اور بتایا کہ محکمہ صحت نے گروگرام کے سوشانت لوک پولیس اسٹیشن میں یہ معاملہ درج کرایاگیا ہے۔

مسٹر وج نے اسپتال میں ڈینگی میں مبتلا سات سالہ بچی کے علاج کے لئے 16 لاکھ روپے کا بھاری بھرکم بل وصولنے کے باوجود لڑکی کی موت ہو جانے کے معاملہ میں کل سٹی باڈی اتھارٹی کو خط لکھ کر اسپتال کی زمین لیز منسوخ کرنے کی ہدایت دی تھی۔ انہوں نے کہا تھا کہ پرائیویٹ اسپتالوں کی من مانی برداشت نہیں کی جائے گی۔ اسپتالوں اور ڈاکٹروں کو اپنے رویے میں بہتری لانا ہوگی۔دہلی کے دوارکا میں رہنے والے جینت سنگھ کی سات سالہ بیٹی اديا سنگھ کو ڈینگی کے علاج کے لئے پہلے راك لینڈ میں داخل کرایا گیا تھا ، بعد میں اسے فورٹس اسپتال میں داخل کرایا گیا. اسپتال میں اديا کے علاج کے 16 لاکھ روپے کا بھاری بھرکم بل وصول کیا گیا اور اس کی جان بھی نہیں بچی. اديا کے علاج کے بل میں چار لاکھ روپے کی رقم تو ادویات کی تھی۔

ڈینگو سے سات سالہ بچی ادیا سنگھ کی موت پر فورٹس اسپتال کے خلاف رپورٹ درج ، 16 لاکھ کا بنایا تھا بل

اس علاج کے لیے اسپتال نے جو بل بنایا اس میں 2700 دستانے، 660 سرنج اور 900 گاؤن کی رقم بھی شامل کی گئی جبکہ دو لاکھ 17 ہزار روپے کی ٹسٹ وغیرہ کے نام پر لئے گئے ۔ معاملے کی جانچ کے لئے ہریانہ محکمہ صحت کے ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل ڈاکٹر راجیو وڈھیرا کی قیادت میں ایک کمیٹی تشکیل دی گئی تھی. اس رپورٹ کی بنیاد پر ہی کارروائی کی گئی ہے۔ حکومت نے جانچ کمیٹی کی رپورٹ کی بنیاد پر مانا کہ بچی کی موت فطری نہیں بلکہ قتل تھی۔لڑکی کو ڈینگی ہونے کے سلسلے میں چیف میڈیکل آفیسر کو مطلع نہ کرنے پر بھی نوٹس دیا گیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز