مایاوتی کے دور حکومت میں فروخت کی گئی 7 چینی میل خریدنے والی کمپنیوں کے خلاف مقدمہ درج

Nov 10, 2017 04:53 PM IST | Updated on: Nov 10, 2017 04:53 PM IST

لکھنؤ: بی ایس پی سربراہ مایاوتی کے دور حکومت میں اترپردیش ریاست چینی کارپوریشن لیمیٹڈکی سات چینی ملیں بہت سستے میں خرید نے والی کمپنیاں تحقیقات میں فرضی نکلی۔ حکومت کو تحقیقاتی رپورٹ ملنے کے بعد کارپوریشن کے سربراہ منیجر ایس مپرانے گومتی نگر تھانہ میں فرضی کمپنیوں کے ڈائرکٹرز کے خلاف دھوکہ دہی کی دفعات میں مقدمہ درج کیا ہے۔ اس معاملے میں بڑے لوگوں کے نام سامنے آسکتے ہیں۔

انسپکٹر آنند شکلا نے بتایا کہ ریاست چینی کارپوریشن لمیٹڈ کے تابع 10 موجودہ اور 11 بند چینی ملوں کو 2010۔11 میں فروخت کردیا گیا تھا ۔ان میں سے دیوریا، بریلی،لکشمی گنج اور ہر دوئی کی یو نٹ خریدنے کے لئے دہلی کی نمرتا مارکیٹنگ پرائیویٹ لیمیٹڈ کمپنی اور چھتولی وہ بارہ بنکی یونٹ خرید نے کے لئے گریاشوگرکمپنی پرائیوٹ لمیٹڈ نے دعو ی پیش کیا تھا ۔

مایاوتی کے دور حکومت میں فروخت کی گئی 7 چینی میل خریدنے والی کمپنیوں کے خلاف مقدمہ درج

دونوں کمپنیوں کے ڈائریکٹرز نے 2008-09 کی بیلنس شیٹ لگائی تھی ۔ حکومت کی جانب سے قائم کمیٹی کی سفارش کی بنیاد پر دونوں کمپنیوں کو ساتوں فیکٹریاں بیچ دیں گئی تھیں۔دریں اثنا، دونوں کمپنیاں تحقیقات میں جعلی ثابت ہوئی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز