فرضی دستاویزات جمع کرنے کے معاملہ میں مولانا محمود مدنی پر سی بی آئی کا شکنجہ

Sep 27, 2017 09:15 AM IST | Updated on: Sep 27, 2017 09:15 AM IST

نئی دہلی۔ جمعیتہ علما ہند (م) کے صدر اور سابق رکن پارلیمنٹ مولانا محمود مدنی پر سی بی آئی اب شکنجہ کسنے کی تیاری میں ہے۔ مولانا پر سرکاری خزانہ کو نقصان پہنچانے اور دستاویزات میں ہیر پھیر کرنے کا الزام ہے۔ پیر کے روز سی بی آئی کی ایک عدالت نے بدعنوانی کے معاملہ میں مولانا محمود مدنی پر مقدمہ چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ سی بی آئی عدالت کا کہنا ہے کہ مولانا مدنی پر مقدمہ چلانے کے لئے آن ریکارڈ کافی مواد ہے جس کی بنیاد پر تعزیرات ہند اور بدعنوانی مخالف قانون کی مختلف دفعات کے تحت ان کے اور ان کے ساتھیوں کے خلاف مقدمہ چلایا جا سکتا ہے۔

روزنامہ انقلاب کے مطابق، سی بی آئی کی داخل کردہ شکایت میں کہا گیا ہے کہ مولانا مدنی نے راجیہ سبھا سکریٹریٹ میں فرضی دستاویزات جمع کر کے زیادہ اخراجات کی ادائیگی کا دعویٰ کرکے مجرمانہ کوشش کی ہے۔ دو ہزار بارہ میں ہوائی جہاز کے فرضی ٹکٹ کی کاپی داخل کر کے سرکاری خزانہ کو نقصان پہنچانے کی کوشش کی تھی۔

فرضی دستاویزات جمع کرنے کے معاملہ میں مولانا محمود مدنی پر سی بی آئی کا شکنجہ

مولانا محمود مدنی، فائل فوٹو۔

جانچ ایجنسی نے مزید الزام عائد کیا کہ مولانا مدنی نے اپنے اہل خانہ کے نام پر فرضی ٹکٹ داخل کر کے اور راجیہ سبھا کے اکاونٹ پر تقریبا پانچ لاکھ روپئے کا دعویٰ کر کے اپنے عہدہ کا غلط استعمال کیا تھا جس کی وجہ سے حکومت ہند کے خزانہ کو نقصان ہوا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز